ہندوستان ضابطوں پر مبنی عالمی سلامتی نظام کیلئے پرعزم | شنگھائی تعاون تنظیم کی میٹنگ سے راج ناتھ کا خطاب

نئی دہلی //وزیردفاع راج ناتھ سنگھ نے کل کہا کہ ہندوستان کھلے ،شفاف،جامع اور بین اقوامی قوانین پر مبنی عالمی سلامتی نظام کے لیے پرعزم ہے ۔ماسکو کے سفر پر گئے مسٹر سنگھ نے شنگھائی تعاون تنظیم(ایس سی او)کے رکن ممالک کے وزرائے دفاع کی میٹنگ کو خطاب کرتے ہوئے کہا کہ اس سال دوسری عالمی جنگ اور اقوام متحدہ کے قیام کے 75 برس ہوگئے ہیں۔اقوام متحدہ ایسی پرامن دنیا کا حامی ہے جہاں بین اقوامی قوانین اور ممالک کی خود مختاری کا احترام کیا جاتا ہے اور کوئی بھی ملک کسی دوسرے ملک پر یکطرفہ حملہ سے پرہیز کرتا ہے ۔ہندوستان کا موقف اور پالیسی کی وضاحت کرتے ہوئے انہوں نے کہا ،‘‘میں زور دے کر کہتا ہوں کہ اس طرح کی عالمی سلامتی ڈھانچے کے حق میں ہے جو کھلے ،شفاف،جامع،قوائد پر مبنی اور بین الاقوامی قوانین کا پابند ہو۔انہوں نے کہا کہ ایس سی او ممبر ممالک میں دنیا کی 40فیصد آبادی رہتی ہے اور یہ ضروری ہے کہ خطہ میں باہمی اعتماد اور تعاون کا ماحول رہے ،کسی طرح کا تجاوزات نہ ہو،بین الاقوامی قوانین اور اصولں کا احترام ہو،ایک دوسرے کے مفاد کے تئیں حساسیت اور اختلافات کوحل کیا جائے ۔ہمسایہ ملک افغانستان کی صورت حال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دنیا سبھی کے لیے محفوظ اور ترقی حاصل کرنے کے ہدف سے ابھی بھی دور ہے ۔افغانستان میں سیکوریٹی کی حالت باعث تشویش ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہندوستان افغانستان کی قیادت میں،افغانستان کی اپنی اور افغانستان کے کنٹرول والی جامع امن عمل کے وہاں کے لوگوں اورحکومتوں کی کوششوں کو مسلسل حمایت کرتا رہے گا۔