ہندوستان باہمی افہام و تفہیم کاحامی:مودی کینیڈا کے ساتھ دوطرفہ تعلقات استوار کرنے کے حق میں ہیں

یو این آئی

نئی دہلی// وزیر اعظم نریندر مودی نے پیر کو کینیڈا کے وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو کی مبارکباد کیلئے شکریہ ادا کیا اورکہا کہ ہندوستان باہمی افہام و تفہیم اور ایک دوسرے کے تحفظات کے احترام کی بنیاد پر دوطرفہ تعلقات استوار کرنے اور اسے آگے لے جانے کی کے حق میں ہے۔ مودی نے مندرجہ بالا باتیں کینیڈا کے خالصتان کے حامی عناصر کو فروغ دینے کے تناظر میں کہیں۔اتوار کو مسلسل تیسری بار ملک کی قیادت سنبھالنے کے بعد وزیر اعظم نے ٹویٹر پر کہا ’’ پیغام مبارکباد کیلئے شکریہ ٹروڈو۔ ہندوستان کینیڈا کے ساتھ باہمی افہام و تفہیم اور ایک دوسرے کے تحفظات کے احترام کی بنیاد پر کام کرنے کا منتظر ہے‘‘۔ مودی کینیڈا کے وزیر اعظم ٹروڈو کے ایک پیغام مبارکباد کا جواب دے رہے تھے جس میں انہوں نے کہا تھا ’’کینیڈا اپنے ممالک کے لوگوں کے درمیان انسانی حقوق، تنوع اور قانون کی حکمرانی پر مبنی تعلقات کو آگے بڑھانے کیلئے ان کی (ہندوستان کی ) حکومت کے ساتھ کھڑا ہے۔ مل کر کام کرنے کیلئے تیار ہیں‘‘۔ہندوستان نے کینیڈا کو سیاسی فائدے کیلئے خالصتانی عناصر کو فروغ دینے کے خلاف بارہا خبردار کیا ہے۔مئی میں اس وقت کے وزیر خارجہ ایس جے شنکر نے کہا تھا کہ کینیڈا کی طرف سے خالصتان کے حامی عناصر کو اپنے گھریلو سیاسی مفادات کو آگے بڑھانے کی حمایت نے ہندوستان کے ساتھ اس کے دو طرفہ تعلقات کو نقصان پہنچایا ہے اور خبردار کیا تھا کہ ‘ایسے لوگوں کو پناہ دینا ‘جو مجرم ہیں’ کینیڈا کے لیے صرف نقصان دہ ہوں گے۔مہاراشٹر کے ناسک میں ایک تقریب میں ڈاکٹر جے شنکر نے کہا تھا کہ ’’اظہار رائے کی آزادی کسی بیرونی ملک میں تشدد، علیحدگی پسندی یا دہشت گردی کی حمایت کرنے کی آزادی نہیں ہو سکتی لیکن وہاں خالصتانیوں کا ایک گروپ ہے جس نے کینیڈا میں آزادی کا غلط استعمال کیا ہے۔‘‘ آزادی – ابھی نہیں وہ برسوں سے ایسا کر رہے ہیں۔ “یہ عناصر کینیڈا کی سیاست میں ووٹ بینک کی سیاست کا حصہ ہیں اور ان کی حوصلہ افزائی کی جاتی ہے۔”انہوں نے کہا کہ آج میں ایک حقیقت بیان کروں گا کہ ان لوگوں کی سرگرمیوں کی وجہ سے ہمارے دو طرفہ تعلقات خراب ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہندوستانی سفارت کاروں کو خالصتانی عناصر کی طرف سے دھمکیوں کا سامنا ہے اور ایک بار ایک سفارت کار کے گھر پر اسموک بم بھی پھینکا گیا تھا۔ڈاکٹر جے شنکر نے یہ بھی کہا کہ جس نے بھی ہندوستان کے خلاف علیحدگی کی حمایت کی اسے کینیڈا میں ‘پناہ’ دی گئی۔ڈاکٹر جے شنکر کے تبصرے پچھلے سال کینیڈا میں علیحدگی پسند رہنما ہردیپ سنگھ نجار کے قتل کے سلسلے میں چار ہندوستانی شہریوں کی گرفتاری اور قتل کے الزام کے بعد سامنے آئے ہیں۔

ملک کو ترقی یافتہ بنانے کیلئے ملازمین خود کو وقف کردیں
نئی دہلی/یو این آئی/ وزیر اعظم نریندر مودی نے وزیر اعظم کے دفتر کے ملازمین سے اپیل کی ہے کہ وہ ترقی یافتہ ہندوستان کے ہدف کو حاصل کرنے کے لیے خود کو وقف کر دیں۔پیر کی صبح وزیر اعظم کا عہدہ سنبھالنے کے بعد مسٹر مودی نے دوپہر کو وزیر اعظم کے دفتر کے ملازمین سے خطاب کیا۔ انہوں نے کہا کہ ان کی ٹیم کو ایسے لوگوں کی ضرورت ہے جو ملک کی ترقی کے لیے دن رات کام کر سکیں اور خود کو اس مقصد کے لیے وقف کر سکیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ ان ملازمین کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہیں جو گزشتہ دس برسوں سے اس ٹیم میں کام کر رہے ہیں اور اب کہیں اور جانا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وہ ٹیلی ویژن کے ذریعے ان کی بات سننے والے دیگر ملازمین سے اس ٹیم میں شامل ہونے کی اپیل کرتے ہیں اور انہیں دعوت دیتے ہیں۔انہوں نے کہا، ”میری نیک تمنائیں ان ملازمین کے لیے جو گزشتہ دس برسوں سے پی ایم او میں کام کر رہے ہیں اور کہیں اور جانا چاہتے ہیں۔