ہسپلوٹ ۔ ڈھوک رابطہ سڑک 9برسوں سے تشنہ تکمیل

 تھنہ منڈی // تحصیل تھنہ منڈی کے ہسپلوٹ علاقہ سے ڈھوک جانے والی10کلومیٹر سڑک 9برسوں سے مکمل نہیں ہو سکی ۔مکینوں کے مطابق وزیراعظم گرام سڑک یوجنا کے تحت سڑک لگ بھگ گیارہ کروڑ روپے سے زائد کی لاگت سے تعمیر کی جارہی ہے جس میں سے پانچ کروڑ ستاسی لاکھ اور سینتالیس ہزار روپے پہلی قسط کے طور پر واگزار کروائے جا چکے ہیں جبکہ تقریباً پانچ کروڑ روپے کی دوسری قسط ابھی باقی ہے۔ متعلقہ محکمہ نے 2012 میں اس روڈ کی کٹائی کی تھی اس کے بعد اس پربجری بچھائی گئی مگر وہ بھی اب اکھڑ گئی ہے ا۔عام لوگوں نے بتایا کہ سڑک پر اب جگہ جگہ کھڈے پڑے ہوئے ہیں جبکہ نالیوں کا بھی کوئی بندوبست نہیں ۔انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ پی ایم جی ایس وائی کے تحت بننے والی اس سڑک پر19کلوٹ اور دو پل تعمیر کی جانی تھی لیکن اس پر نالیاں ،حفاظتی دیواریں اور کلوٹ وغیرہ تعمیر نہ ہونے کی وجہ سے کروڑوں روپے کی زمینیں تباہ ہو گئی ہیں۔محمد ایوب پنچ ، محمد ریاض پنچ اور محمد رزاق چوہدری نے بتایا کہ اس سڑک پر کسی بھی جگہ پر حفاظتی دیواریں تعمیر نہیں کی گئی ہیں جس کی وجہ سے انہیں کروڑوں روپے کا نقصان ہوا ہے۔ انھوں نے کہا کہ سب ڈویڑن تھنہ منڈی کی تمام سڑکوں کی یہی حالت ہے۔ یاد رہے کہ یہ سڑک قصبہ تھنہ منڈی کے تقریباً سات دیہات کو جوڑتی ہے۔ متعلقہ جونیئر انجینئر صفیر چوہدری نے بتایا کہ اس سڑک پر صرف تین کلوٹ اور دو پلیاں ہیں جن کا جلد ہی جام شروع کیا جا رہا ہے۔ متعلقہ افسر نے مزید کہا کہ اس سڑک کے پہلے پانچ کلومیٹر پر تارکول بچھانے کا کام شروع کر دیا گیا ہے۔لوگوں نے انتظامیہ سے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ معاملہ میں مداخلت کر کے پروجیکٹ کو جلداز جلد مکمل کروایا جائے ۔