ہدی پورہ رفیع آباد کی وسیع آبادی پانی سے محروم

بارہمولہ//رفیع آباد کے ہدی پورہ اور پرے پورہ دو گائوں،جو20 ہزرا سے زیادہ نفوس پرمشتمل ہیں ،دور جدید میں پینے کے صاف پانی کیلئے ترس رہے ہیں ۔لوگوں کا کہنا ہے کہ آج تک انہیںپینے کا صاف پانی میسر نہیں ہورہا ہے جس کے نتیجے میں لوگ بغیر فلٹریشن پانی پینے سے تنگ آچکے ہیں ۔ ہدی پورہ اور پرے پورہ کے لوگوں نے محکمہ پی ایچ ای پر پر الزام عائد کر تے ہوئے بتا یا کہ محکمہ کی عدم توجہی سے پانی کی سپلائی بُری طرح سے متاثر ہے اور لوگ ندی نالوں کاگندہ پانی پینے پر مجبور ہیں جس سے مہلک بیماریاں پھوٹ پڑنے کا خطر ہ لاحق ہے ۔ انہوں نے کہاکہ پانی کی قلت نے لوگوں کی زندگی اجیرن بنا کے رکھ دی ہے ۔ایک مقامی شہری عبدالرزاق نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا ہے کہ علاقے کو جو پانی سپلائی ہورہا ہے، نالہ حمل پر  ایک اریگیشن پمپ  ہے اور دہائیوں پہلے اُسی کے ساتھ جوڑا گیا ہے جس سے کافی گندہ پانی بستی تک پہنچا ہے جس کے نتیجے میںیہاں کے لوگ اکثر بیما ر رہتے ہیں ۔ مذکورہ شہری نے کہاکہ 20 ہزاروں نفوس پر مشتمل آبادی کو 21 ویں صدی میں بھی پینے کا صاف پانی میسر نہیں ہے ۔انہوں نے کہا کہ اگر چہ لوگوں نے کئی بارنے متعلقہ حکام کے دروازے کھٹکھٹائے لیکن عوام کو مایوسی کے سوا اور کچھ نہیں ملا ۔ لوگوںنے گورنر انتظامیہ اور متعلقہ محکمہ کے ا علیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ زمینی سطح پر صورتحال کا جائیزہ لیں اور لوگوں کو پینے کا صاف پانی فراہم کرنے کیلئے فوری طور پرا قدامات کریں بصورت دیگر عوام سڑکوں پر آنے کیلئے مجبور ہونگے ۔اس سلسلے میں متعلقہ محکمہ کے ایک جونئیر انجئینر نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ دراصل علاقے میں پینے کا صاف پانی کہیں پر بھی دستیاب نہیں جس سے مقامی آباد ی کو مشکلات درپیش ہیں تاہم لڈورہ مقامی پر کئی دیہات کیلئے ایک فلٹریشن پلانٹ تعمیر کیا گیا ہے جس کو اب صرف پائیپیں لگانی باقی ہے اور اُسی سے ان علاقوں میں بھی پانی سپلائی میںبہتری آئے گی ۔