ہتھیاروں اُڑانے والا ایس پی او حزب میں شامل

شوپیان // 28 ستمبر کو پی ڈی پی ممبر اسمبلی اعجاز احمد میر کی سرکاری رہائش گاہ سے سات رائفلیں اور ایک پستول لیکر فرار ہونے والے 24 سالہ اسپیشل پولیس آفیسر (ایس پی او) عادل بشیر نے حزب المجاہدین کی صفوں میں شمولیت اختیار کرلی ہے۔ سوشل میڈیا پر کچھ تصویریں وائرل ہو گئی ہیں جن میں عادل کی طرف سے لوٹی گئی رائفلوں اور خود عادل کو حزب المجاہدین کے جنگجوؤں کے ساتھ دیکھا جاسکتا ہے۔ ایک تصویر میں عادل بشیر حزب المجاہدین کے چار جنگجوؤں بشمول اعلیٰ کمانڈر زینت الاسلام کے ساتھ کھڑا ہے۔ کہیں کسی سیب کے باغ میں لی گئی اس تصویر میں عادل بشیر سیاہ رنگ کی کیپ، سرخ رنگ کی جیکٹ اور سیاہ رنگ کا ٹروزر پہنے ہوئے ہے۔ تصویر میں سبھی جنگجو بشمول عادل  ہاتھوں میں اے کے 47 رائفلیں تھامے ہوئے ہے۔یہ امر قابل ذکر ہے کہ جنوبی کشمیر کے دو اضلاع پلوامہ اور شوپیان میں دو ہفتوں سے موبائل انٹر نیٹ بند ہے ۔واضح رہے کہ پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ اسے اس کیس میں اہم پیش رفت حاصل ہوئی ہے۔ ریاست میں امن وقانون اور سیکورٹی کے ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل آف پولیس منیر احمد خان نے اتوار کو کشمیر عظمیٰ کو بتایا تھا کہ’ہم نے کیس کو کریک کرلیا ہے، ایس پی او نے اپنے منصوبے پر عمل درآمد کے دوران شوپیان کے ایک رہائشی کی مدد حاصل کی ہے،ہم نے اس شہری کی شناخت کرلی ہے‘۔