ہائی سکول پٹھانہ تیر کا درجہ بڑھانے کی مانگ لوگوںکا حکومت پر وعدہ وفا نہ کرنے کا الزام،ایل جی سے فریادی

جاوید اقبال

مینڈھر//سب ڈویژن مینڈھر کے گاؤں پٹھانہ تیر کے لوگوں نے سرکار سے اپیل کی کہ ہائی سکول پٹھانہ تیر کا درجہ بڑھا كر ہائر سیکنڈری سکول بنایا جائے۔ علاقہ کے لوگوں کا کہنا ہے کہ کئ سال قبل بنا ہائی سکول سیاست کا شکار ہونے کی وجہ سے ہائر سیکنڈری نہ بن سکا۔لوگوں کا کہنا ہے کہ گورنمنٹ ہائی سکول پٹھانہ تیر ایک پہاڑی پر واقعہ ہے جس کو کئ سال قبل ہائیر سیکنڈری کا درجہ ملنا چاہیے تھا لیکن سیاسی لوگوں کی مداخلت کی وجہ سے سکول کا درجہ نہ مل سکا ۔لوگوں کا کہنا ہے کہ سکول کے معاملہ کو لیکر کئی دنوں تک احتجاج بھی چلا تھا اور انتظامیہ نے وعدہ بھی کیا تھا کہ جلد آپکے سکول کا درجہ بڑھايا جائے گا لیکن وعدہ کرنے کے باوجود بھی لوگوں کے بچوں کے ساتھ اِنصاف نہیں کیا گیا ۔لوگوں کا کہنا ہے کہ سینکڑوں کی تعداد میں بچوں کو دور دراز کے سکولوں میں تعلیم حاصل کرنے کیلئے جانا پڑتا ہے۔ اُنکا کہنا تھا کہ زیادہ تر بچے غریب خاندانوں سے تعلق رکھتے ہیں اور دور دراز کے سکولوں میں جا کر تعلیم جاری نہیں رکھ سکتے جبکہ کئی لڑکیاںسکول چھوڑ دیتی ہیں۔ لوگوں کا کہنا ہے کہ پٹھانہ تیر علاقہ میں بسنے والے لوگوں کے بچوں کے ساتھ اِنصاف کیا جائے۔لوگوں نے لیفٹیننٹ گورنر انتظامیہ سے ایپل کی ہے کہ سکول کو ہائیر سیکنڈری کا درجہ دیا جائے ۔