ہائی سکول ’ویسٹ سوئیاں ‘میں محض 4ٹیچر تعینات | دیگر بنیادی سہولیات بھی نہیں ،150بچوں کا مستقبل تاریک

جاوید اقبال
مینڈھر //مینڈھر سب ڈویژن کے ایجوکیشن زون بالاکوٹ میں قائم کردہ گو رنمنٹ ہائی سکول ’ویسٹ سوئیاں ‘میں سٹاف ممبران سمیت دیگر بنیادی سہولیات کی شدید قلت کی وجہ سے بچوں کو مستقل تاریک ہوتا جارہا ہے ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ سکول کو 2014میں مڈل سے ہائی سکول بنایا گیا تھا تاکہ حد متارکہ کے نزدیکی علاقوں میں بچوں کو اپنے ہی علاقہ میں سہولیات فراہم کرنے کیلئے مڈل سکول کا درجہ بڑھایا گیا تھا لیکن 8برسوں بعد بھی سکول میں نان ٹیچنگ سٹاف کا کوئی بھی ملازم تعینات نہیں کیا جاسکا جبکہ تدریسی عملے میں صرف 4ملازمین تعینات ہیں جن میں ایک ماسڑگریڈ اور 3ٹیچر ہیں ۔سکول میں نویں اور دسویں جماعت میں 50سے زائد بچے زیر تعلیم ہیں لیکن ان کیلئے درکار سٹاف بھی نہیں ہے ۔سکول میں اس وقت ہیڈ ماسڑکی کرسی بھی خالی پڑی ہوئی ہے ۔والدین نے بتایا کہ محکمہ ایجوکیشن کی جانب سے سکول میں صرف1ٹائلٹ تعمیر کروایا گیا ہے جس کو 150بچے و سٹاف ممبران استعمال کر سکتے تھے لیکن ابھی تک پانی کا کوئی کنکشن ہی فراہم نہیں ہے جس کی وجہ سے مذکورہ کمپلیکس بھی بند پڑا ہوا ہے ۔غور طلب ہے کہ مذکورہ سکول 1980میں بطور پرائمری سکول قائم کیا گیا تھا جس کے بعد اس کو پہلے مڈل اور اب ہائی سکول کا درجہ دیا گیا ہے ۔سکول میں بچوں کیلئے تدریسی و غیر تدریسی عملے کیساتھ ساتھ کھیلوں کا میدان و دیگر بنیادی سہولیات بھی موجود نہیں ہیں جس کی وجہ سے بچوں کو مستقبل خراب ہو نے کا خدشہ ظاہر کیا جارہاہے ۔والدین نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ مذکورہ سکول میں بنیادی سہولیات ہی دستیاب نہیں ہیں جس کی وجہ سے وہ اپنے بچوں کیلئے فکر مند ہیں ۔انہوں نے کہاکہ اس سلسلہ میں انہوں نے کئی مرتبہ متعلقہ حکام سے بھی رجوع کیا لیکن ابھی تک کوئی بھی عملی قدم نہیں اٹھایا گیا ہے ۔والدین و عام معززین نے مانگ کرتے ہوئے کہاکہ مذکورہ ہائی سکول میں بنیادی سہولیات فراہم کی جائیں ۔