گیلانی نے 8 برس بعد سرینگر کی کسی مسجد میں نمازِ جمعہ ادا کی

 سری نگر//کشمیر انتظامیہ نے جمعہ حریت (گ) چیئرمین سید علی گیلانی پر سنہ 2010 سے جاری خانہ نظر بندی ختم کرتے ہوئے انہیں 8 برس بعد سری نگر کی کسی مسجد میں جمعہ کی نماز ادا کرنے کی اجازت دی۔ یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ ریاستی پولیس کے سربراہ ڈاکٹر شیش پال وید نے گریٹر کشمیر کو بتایا کہ گیلانی، حریت کانفرنس (ع) کے چیئرمین میرواعظ مولوی عمر فاروق اور جموں وکشمیر لبریشن فرنٹ (جے کے ایل ایف) کے چیئرمین محمد یاسین ملک کہیں بھی جانے کے لئے آزاد ہیں۔ تاہم انہوں نے شرط عائد کہ تینوں رہنماو¿ں کو ’اینٹی نیشنل‘ تقریروں اور نقص امن پیدا کرنے سے اجتناب کرنا ہوگا۔ حریت کے ایک ترجمان نے کہا ’ اخباری اطلاع کے تناظر میں پولیس انتظامیہ کی طرف سے متحدہ مزاحمتی قیادت کو اپنی تحریکی سرگرمیاں آزادانہ طور پر جاری رکھنے کا عندیہ دینے کی خبر شائع ہونے کے ساتھ ہی گیلانی نے آج پورے 8سال کے بعد جامع مسجد حیدرپورہ میں نماز جمعہ ادا کرنے کا فیصلہ کیا‘۔