گول کی شناخت’ مسخ‘ کرنے پر گول واسیوں کا شدید ردِ عمل

گول//میری تجویز، میرے احساسات کی ترجمان ہے،اِن باتوں کا اظہار پنچایت گول (بی) کے نائب سرپنچ حافظ عبدالطیف ملک نے کیا۔ نائب سرپنچ موصوف نے اپنی تجویز میں کہا کہ میں اپنے علاقہ وادیٗ گول کی عظمت اور تشخص کو برقرار رکھنے کیلئے گول سنگلدان کے تمام پنچائت نمائندگان، بی ڈی سیزاور ڈی ڈی سی کونسلرس سے اپیل کرتا ہوں کہ وقت کوضائع کئے بغیر اجتماعی طور اپنے استعفے ایل جی انتظامیہ کے سامنے پیش کریں، میں پہلا شخص ہوں گا جو سب سے پہلے آپ کے ہاتھ میں اپنا استعفیٰ تھما دے گا۔ تجویز میں اْن کا مزید کہنا تھا کہ اِس میں کوئی دورائے نہیں میں ذاتی طور بھی اپنا استعفیٰ سرکار کے سامنے پیش کر کے اپنے حصے کا چراغ روشن کرسکتا ہوں لیکن محض اک چراغ سے ہمارا تاریک ہونے والا مستقبل روشن نہیں ہو سکتا ،بلکہ مستقبل کو روشن کرنے کیلئے ہم سب نے اجتماعی طور بطورِ احتجاج اپنے استعفے پیش کرنے ہوںگے اور حالات ہم سے یہی تقاضا بھی کر رہے ہیں۔انھوں نے کہا میں انتہائی حساس اور جذباتی ہوکر اور دِل کے نہاں خانوں سے آپ سبھی معزز و مکرم عوامی نمائندگان کو پھر سے اپیل کرتا ہوں کہ تیار ہو جائیں اور حق و باطل کی اِس جنگ میں قربانی دیں، آنے والا وقت موجودہ وقت میں ہم سے قربانی طلب کر رہا ہے لہٰذا ہمیں گریز نہیں کرنا چاہیے۔براہِ کرم غور و فکر کر کے اور آنے والی نسلوں کو ’گلاب ‘جیسا گول دینے کیلئے قربانی دینے کیلئے متحد ہو جائیں۔ انھوں نے تمام پنچائت نمائندگان سے مخاطب ہو کر کہا کہ اگر وقت کے اِس حقیر عہدے کو ہم نے مستقبل کیلئے قربان کر دیا تو ہم ضرور حق و باطل کی اِس جنگ میں فتح حاصل کریں گے۔