گوجوارہ چوک میں ہولناک آگ

 سرینگر//شہر خاص کے گوجوارہ چوک میںدوران شب آگ کی ایک ہولناک واردات میں عمارت میں قائم13 دکانیں جل گئیںجس کے نتیجے میں مجموعی طورکروڑوں روپے کی املاک تباہ ہوئی۔جمعرات اور جمعہ کی درمیانی شب قریب دو بجکر10منٹ پرپائین شہرکے گوجوارہ چوک میں اُس وقت سنسنی پھیل گئی جب ایک تجارتی عمارت سے اچانک آگ کے شعلے بلند ہوئے ۔جس نے آناً فاناً پوری عمارت کو اپنی لپیٹ میں لے لیا۔اس موقعے پر پورے علاقے میںاتھل پتھل مچ گئی اور لوگ گھروں سے باہرآکر آگ بجھانے کی کارروائی میں جٹ گئے ۔یہ دو منزلہ عمارت مقامی اوقاف کمیٹی کی جائیداد ہے جس کی دونوں منزلوں میں قریب24دکانیں ہیں۔واقعہ کی اطلاع ملتے ہی پولیس کی ایک ٹیم اور فائر بریگیڈ کا عملہ جائے واردات پر پہنچ گیا اور بچائو کارروائی شروع کی۔تاہم اس سے قبل پوری عمارت مکمل طور آگ کی لپیٹ میں آچکی تھی اور دوسری منزل کی دکانوں میں موجود سارا سامان بھی راکھ کے ڈھیر میں تبدیل ہوگیا تھا۔عینی شاہدین کے مطابق عمارت کی دوسری منزل مکمل طور خاکستر ہوئی جبکہ پہلی منزل میں قائم درجن بھر دکانوں کو آگ کے ساتھ ساتھ پانی کی بوچھاڑ سے بھی شدید نقصان پہنچا۔جو دکانیں جل کر خاکستر ہوئیں، ان میں ملبوسات، کریانہ، کاسمیٹک، فرنشنگ، ادویات، کمپیوٹر، آئس کریم، ٹیلر ماسٹر وغیرہ کی دکانیں ہیں۔محکمہ فائر اینڈ ایمرجنسی سروسز نے بتایا کہ سب سے پہلے فائر اسٹیشن رعناواری کا عملہ اور آگ بجھانے والی گاڑیاں جائے واردات پر پہنچی اور اس کارروائی میں مجموعی طور شہر کے9مختلف فائر اسٹیشنوں سے وابستہ19فائر انجنوں اور ٹینڈررس کے ساتھ ساتھ درجنوں اہلکاروںنے حصہ لیا۔انہوں نے بتایا کہ اس واردات میں مجموعی طور پرکروڑوں روپے کی املاک خاکستر ہوگئی اور نقصان کا تخمینہ لگایا جارہا ہے۔پولیس نے معاملے کی نسبت کیس درج کرلیا ہے اور مزید چھان بین جاری ہے۔جمعہ کی صبح علاقے میں ماتم کا ماحول تھا اور لوگوں کی ایک بڑی تعداد نے متاثرہ دکانداروں کے ساتھ یکجہتی اور ہمدردی کا اظہار کیا۔دریں اثناء مقامی لوگوں نے بتایاکہ آگ کی اس خطرناک واردات کے نتیجے میں کروڑوں روپے مالیت کی املاک اورکاروباری سامان مکمل طورپرتباہ ہوگیا،جسکے نتیجے میں تقریباًدودرجن تاجروں کے ذریعہ معاش پربڑاسوالیہ نشان لگ گیا۔انہوں نے متاثرہ دکانداروں کی فوری بازآبادکاری کاانتظامیہ سے مطالبہ کیا۔اُدھرپولیس تھانہ نوہٹہ نے آگ کی اس شبانہ واردات کی مناسبت سے ایک کیس درج کرکے تحقیقات شروع کردی ۔