گلاب پورہ لار میں سیمنٹ فیکٹری نذر آتش

گاندربل//ژانتھن گلاب پورہ لار میں پر تشدد واقعات میں پر ہجوم بھیڑ نے ہارون سیمنٹ فیکٹری کو آگ لگا دی جس کے بعد فورسز نے آس پاس کی بستی میں گھس کر توڑ پھوڑ کی۔سنیچرکی شام جب لوگ افطار کررہے تھے تو ژانتھن گلاب پورہ لار میں سینکڑوں افراد پر مشتمل ہجوم نے برسوں سے بند پڑی ہارون سیمنٹ فیکٹری پر دھاوا بول کر پہلے توڑ پھوڑ کی اور پھر احاطے میں موجود عمارت کو آگ لگا دی جس سے فیکٹری کو شدید نقصان پہنچااورہجوم منتشر ہوگیا۔عینی شاہد شوکت احمد کے مطابق رات نو بجے جس وقت لوگ تراویح پڑھنے کی تیاریاں کررہئے تھے کہ فورسز نے سیمنٹ فیکٹری کے آس پاس کی بستی پر دھاوا بول کر مرد وزن کی مارپیٹ کرتے ہوئے مکانات اور صحنوں میں کھڑی درجنوں گاڑیوں کے شیشے چکنا چور کردیئے۔ ساتھ ہی نظیر احمد قریشی اس کے دو فرزند ارشد احمد اور شفاعت احمد،عبدلمجید، سعید ممتاز احمد،نظیر احمد چوہان سمیت کئی افراد کو گرفتار کر لیا گیا۔ایتوار صبح مقامی لوگوں نے فورسز کی زیادتیوں،توڑ پھوڑ اور گرفتاریوں کے خلاف احتجاج اور مظاہرے کئے ۔اس موقعہ پر ممبر اسمبلی گاندربل شیخ اشفاق جبار اور ایس ایس پی گاندربل فیاض احمد نے موقعہ پر پہنچ کر مظاہرین کو یقین دلایا جس کے ساتھ ہی گرفتار کئے گئے افراد کو رہا کیاگیااورمظاہرین منتشر ہوگئے۔ پولیس نے معاملے کی نسبت کیس زیر نمبر 20/2017،147.148.149.332.336.427درج کرکے تحقیقات شروع کردی ہے۔