گریف نے لوگوں کو مشکلات میں ڈال دیا

سرنکوٹ//گریف کی طر ف سے سرنکوٹ بازار سے گزرنے والی سڑک پر کنکریٹ کاکام شروع کئے جانے پر لوگوں نے راحت کی سانس لی تھی لیکن یہ کام پایہ تکمیل کو پہنچنے سے قبل ہی بند کردیاگیاہے ۔ پچھلے دو ہفتوںسے گریف حکام کی طرف سے بند رکھاگیاہے جس کی وجہ سے لوگوں کو سخت مشکلات کاسامناہے ۔سب سے بڑی پریشانی آدھی سڑک پر کنکریٹ کرنے اور آدھی کو چھوڑ دینے کی وجہ سے وجہ درپیش ہے اور جہاں سڑک کچھ جگہوںسے اونچی ہوگئی ہے وہیں کچھ جگہوںسے بہت نیچے رہ گئی ہے جس میں گاڑیاں پھنس جاتی ہیں اور ان کے پرزے ٹوٹ جاتے ہیں ۔یہی نہیں کہ اسی وجہ سے روزانہ جام لگنے کے سلسلے میں بھی اضافہ ہواہے اور لوگوں کی مشکلات کم ہونے کے بجائے بڑھتی جارہی ہیں۔بیکری کی دوکان کرنے والے ایک نوجوان نے بتایاکہ سڑک ادھوری چھوڑ دینے کی وجہ سے ان کاکام متاثر ہورہاہے ۔ انہوںنے کہاکہ ایک تو جام لگنے لگاہے اور دوسرے دھول بیکری کے سامان پر آن پڑتی ہے ۔ مقامی لوگوں نے انجینئروںپر الزام لگاتے ہوئے کہا کہ سابق جونیئر انجینئرنے سرنکوٹ میں بڑی تیزی سے کام کو انجام دیا تھا لیکن اس کے بعد تعینات ہونے والے جونیئر انجینئر بری طرح سے ناکام ہوئے ہیں ۔کئی دوکانداروں نے کہاکہ اگر سڑک پر کام مکمل نہ کیاگیاتو آنے والی برسات کے موسم میں سارا پانی دوکانوں میں داخل ہوسکتاہے کیونکہ دوکانیں نیچے اور سڑک بلند ہوگئی ہے ۔ایڈووکیٹ اعجاز خان نے بتایا کہ یونیک ہوٹل کے سامنے ایک طرف پلی کے کنکریٹ کام کیاگیاہے لیکن دوسری طرف کو چھوڑ دیاگیاہے جہاںسے گزرنے والی گاڑیوں کے پرزے خراب ہوجاتے ہیں۔انہوںنے کہاکہ یہاں پانی رک جاتاہے جو پھر ہوٹل کے اندر بھی آسکتاہے جس سے نہ صرف ایک ہوٹل بلکہ پورے محلہ کو نقصان پہنچے گا۔رابطہ کرنے پر جونیئر انجینئر رام سیوک نے کہاکہ کام انہی دنوں میں شروع کردیاجائے گا۔ انہوںنے کہاکہ ان کے پاس میٹریل نہیں ہے اور جیسے ہی اس کا بندوبست ہوجائے گا،کام دوبارہ شروع ہوجائے گا۔