گاندربل میں خود سوزی کرنے والا نوجوان

گاندربل// ہرن گاندربل گائوں میں 22 فروری کو انہدامی کارروائی روکنے کیلئے خود پر پٹرول چھڑک کر خود سوزی کرنے والا 27 سالہ نوجوان 11 روز تک صورہ اسپتال میں داخل ہوکر بالآخر زندگی کی جنگ ہار گیا۔ 27سالہ نوجوان عامر حمید شاہ ولد عبدالحمید ساکن ہرن نے ہفتہ کی صبح 9 بجکر 10 منٹ پر آخری سانس لی۔عامر حمید پچھلے گیارہ روز سے زیر علاج تھا۔22 فروری کو محکمہ آبپاشی وفلڈ کنٹرول کی جانب سے نالہ سندھ کے کناروں پر انہدامی مہم شروع کی گئی اور اس دوران عامر حمید اچانک غیر قانونی ڈھانچے کے پیچھے سے نمودار ہوا اورانہدامی کارروائی روکنے کیخلاف ایک زیر تعمیر ڈھانچے کی سلیب پر چڑھ کر پٹرول چھڑک کر خود کو آگ لگا دی۔وہ سلیب پر آگ کے شعلوں میں لپٹ کر چکر لگاتا رہا تاہم اس دوران کچھ لوگوں نے اسے بچانے کی کوشش کی اور اسے شدید زخمی حالت میں سکمز صورہ منتقل کیا۔اسکا جسم 90فیصد تک بری طرح جھلس گیا تھا اور اسکی حالت بدستور نازک بنی رہی۔اس واقعہ کا صوبائی انتظامیہ نے سنجیدگی سے نوٹس لیتے ہوئے تحصیلدار گاندربل کو ضلع ترقیاتی کمشنر کے دفتر سے منسلک کردیا گیا، ساتھ ہی ایڈیشنل ضلع ترقیاتی کمشنر گاندربل خورشید احمد شاہ کو تحقیقاتی افسر مقرر کیا گیا۔سنیچر کی صبح جب27سالہ نوجوان کی موت کی خبر ہرن گاندربل پہنچی تو پورا علاقہ دم بخود ہوکر رہ گیا اورپورے علاقہ میں صف ماتم بچھ گیا۔ دوپہر بعد عامرحمید کی تجہیزوتکفین کی گئی۔ انکے جنازہ میں لوگوں کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔