گاندربل،سوپور اور پٹن میں دلدوز حادثات

گاندربل//سوپورپٹن// گاندربل،پٹن اور سوپور میں الگ الاگ واقعات میں ایک کمسن بچی سمیت 3افراد لقمہ اجل بن گئے ہیں۔تفصیلات کے مطابق سندھ بل گاندربل میں 8سالہ بچی عربینہ معراج دخترمعراج الدین لون ساکنہ سندھ بل جو دوسری جماعت کی طالبہ تھی سکول سے گھر کی جانب رواں تھی کہ نجی سکول نیو ڈی پی ایس کی مٹاڈار زیر نمبر JK13A_7153 کے نیچے کچلی گئی اگرچہ مقامی لوگوں نے اسے نزدیکی طبی مرکز پہنچایا لیکن ڈاکٹروں کے مطابق اس کی موت واقع ہوچکی تھی۔پولیس نے موقع پر پہنچ کر گاڑی کے ڈرائیور ریاض احمد لون ولد غلام محمد ساکنہ سندھ بل کی گرفتاری عمل میں لاکر کیس درج کرکے قانونی کارروائی شروع کردی۔عربینہ معراج کی لاش جب گھر لائی گئی تو اس موقع پر علاقہ میں غم و الم کی لہر دوڑ گئی۔ادھر شالہ بگ میں گرمی کی شدت سے بچنے کی خاطر نالہ سندھ میں نوجوانوں کی ٹولیاں نہانے اترے تھے جس میں 15 سالہ نوجوان جنید احمد ڈار ولد بشیر احمد ساکنہ پتی شالہ بگ پانی کی گہرائیوں میں ڈوب گیا ۔مقامی لوگوں اور پولیس کی جانب سے لاش کی تلاش شروع کردی گئی ۔ادھرسوپور میں ایک تیز رفتار ٹپر گاڑی نے منی بس کو ٹکر مار دی جس کے نتیجے میں ایک خاتون سمیت 5شہری زخمی ہو گئے جنہیں علاج ومعالجے کےلئے ہسپتال منتقل کیا گیا ہے ۔بسم اللہ کالونی سوپور کے مقام پرکپوارہ سوپور شاہراہ پر ایک تیر رفتار ٹپر گاڑی نے منی بس زیر نمبر JKO5 2227 کو ٹکر مار دی جس کے نتیجے میں بس میں سوار ایک خاتون سمیت 5افراد زخمی ہوئے ہیں جنہیں علاج ومعالجے کےلئے سب ضلع ہسپتال سوپور علاج ومعالجے کے لئے منتقل کیا گیا ۔بلاک میڈیکل افسر سوپور نے حادثہ کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ہسپتال میں پانچ زخموں کو علاج ومعالجے کےلئے ہسپتال لایا گیا تھا جن میں ایک خاتون بھی شامل تھی۔انہوں نے کہا کہ تمام مسافر جزوی طور پر زخمی ہوئے تھے ۔پولیس نے اس سلسلے میں کیس درج کر کے تحقیقات شروع کر دی ہے ۔دریں اثناءشمالی قصبہ پٹن مےںسڑک کے اےک دلدوز حاثے مےں اےک شخص لقمہ اجل بن گےا ۔چھےن بل پٹن مےں بدھ کے روز اُس وقت اےک دلدوز حادثہ پےش آےا جب سرےنگر سے بارہمولہ آرہی اےک تےز رفتار اےس آر ٹی سی بس زےر نمبر JKO1Y-401 نے اےک راہ چلتے شہری غلام احمد گنائی ولد غلام حسن گنائی ساکنہ چھےن بل پٹن کو ٹکر مار دی جس کے نتےجے مےں وہ موقع پر ہی لقمہ اجل بن گےا ۔ جبکہ ڈرائےور جائے واردات سے فرار ہوگےا۔پولےس نے بس کو ضبط کرکے اےک کےس زےر اےف آئی آر نمبر 128/2017کرکے ڈرائےور کی تلاش شروع کردی۔