کی طرف سے 2کیسوں کی تحقیقاتNIA

سرینگر+بانہال//قومی تحقیقاتی ایجنسی (این آئی اے) نے جموں کشمیر پولیس اور سی آر پی ایف کے ساتھ مل کر شوپیان ، اننت ناگ،بانہال اور ضلع جموں میں 2الگ الگ کیسوں کے سلسلے میں15مقامات پر تلاشیاں لیں جبکہ ایک نوجوان کو گرفتار بھی کیا گیا۔ بیان میں کہا گیا کہ لشکرمصطفی سازشی کیس کے سلسلے میں مقدمہ ابتدائی طور پر گنگیال پولیس اسٹیشن جموں میں ایف آئی آر زیر نمبر 16/2021 کے تحت کیس درج کیا گیا تھا جو کہ لشکرِ مصطفی ،جو جیش محمد کے کہنے پر بھارت کی خودمختاری ، سالمیت اور سلامتی کو خطرے میں ڈالنے کے ارادے سے جموں و کشمیر میں جنگجویانہ کارروائیاں کرنا چاہتے تھے۔ بیان میں کہا گیا ’’این آئی اے‘‘ نے کیس کو دوبارہ درج کیا اور تفتیش شروع کی‘‘۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ اس کیس کے ضمن میں شوپیان،اننت ناگ اور جموں کے اضلاع میں 9مقامات پر چھاپے مارے گئے۔بیان کے مطابق تلاشی کے دوران ، گرفتار ملزمان اور مشتبہ افراد کے گھروں سے کئی ڈیجیٹل ساز و سامان بشمول موبائل فون ، ہارڈ ڈسک ، میموری کارڈ ، پین ڈرائیوز ، لیپ ٹاپ اور کئی کتابچے ،جن میں مجرمانہ مواد موجود ہے برآمد ہوئے ہیں۔تلاشی کے دوران، ایک شہری عرفان احمد ڈار ولد محمد یعقوب ڈار ساکن بٹینگو، اننت ناگ کو بھی  اس کیس میں گرفتار کیا گیا۔بیان میں بتایا گیا’’ ابتدائی تفتیش سے پتہ چلا ہے کہ وہ دیگر گرفتار ملزمان کے ساتھ ملی بھگت کرکے جنگجو پسندانہ سرگرمیوں کو انجام دینے کی سازش میں ملوث تھا۔‘‘ ادھر بٹھنڈی آئی ای ڈی کیس کے سلسلے میں ایک اور کیس میں این آئی اے نے گرفتار افراد کے گھروں واقع شوپیان اور رام بن میں 6مقامات پر تلاشیاں لیں۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ بٹھنڈی بارودی سرنگ بر آمدگی کیس کے سلسلے میںجون کے آخری ہفتے میں بانہال کے ایک نوجوان سے آئی ای ڈی ضبط کی گئی تھی۔ ہفتے کی صبح قومی تحقیقاتی ایجنسی نے اس کیس کے سلسلے میں بانہال سے گرفتار کئے گئے دو نوجوانوں کے گھروں پر بیک وقت چھاپے مارے اور تلاشی کارروائی انجام دی۔ 29 جون کو جموں پولیس نے ندیم الحق راتھر کو جموں سے ایک بارودی سرنگ سمیت گرفتار کیا تھا اور بعد ازاں جموں پولیس نے جولائی کے پہلے ہفتے میں بانہال سے ایک اور نوجوان طالب الرحمان نجار کو حراست میں لیا تھا۔ ان دونوں پر لشکر مصطفی سے تعلق رکھنے اور جموں سے بارودی سرنگ برآمدگی کیس میںسازش کا الزام ہے۔ ایجنسی نے ہفتے کی صبح ندیم الحق ولد عبدالرحمان راتھر ساکن زنہال بانہال اور پڑوسی گائوں کسکوٹ کے نوجوان طالب الرحمان نجار ولد عبدالرحمان نجار کے گھروں  پر چھاپے مارے۔ بیک وقت دونوں مقامات پر کی گئی چھاپہ ماری کے دوران این آئی اے کو بانہال پولیس اور سی آر پی ایف کی مدد حاصل تھی۔ سنیئر سپراٹنڈنٹ آف پولیس رام بن پی ڈی نتیا نے قومی تحقیقاتی ادارے کے چھاپوں کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ یہ خالصتا ً  این آئی اے کی کارروائی تھی اور انکی درخواست پر پولیس اور سی آر پی ایف کی ٹیموں نے مدد کی ۔  انہوں نے کہا کہ جموں میں بارودی سرنگ کی برآمدگی کیس میں بانہال کے گرفتار دو نوجوانوں کے گھروں پر ہفتہ کی صبح این آئی اے نے چھاپہ ماری کی ۔ ذرائع نے بتایا کہ این آئی اے نے ملزمان کے دونوں گھروں میں تلاشی لی اور طالب الرحمان کی والدہ سے بھی پوچھ گچھ کی، کیونکہ ان کے والد عبدالرحمان گھر پر موجود نہیں تھے اور وہ جموں گئے ہوئے تھے۔ ذرائع نے بتایا کہ ندیم الحق راتھر کے گھر سے اس کی ایک نوٹ بک این آئی اے کی ٹیم نے تلاشی کے دوران ضبط کی ہے ۔