کہنہ کھن ڈلگیٹ میں ہولناک آگ

 
سرینگر// کہنہ کھن ڈلگیٹ میں آگ کی ایک ہولناک وارادت میں5ہوٹل اورایک رہایشی مکان جل گیا ۔جمعرات اور جمعہ کی درمیانی شب کہنہ کھن ڈلگیٹ میںرات کے2بجے ایک گیسٹ ہاوس سے اچانک شعلے نمودار ہوئے ، جن کی زد میں آناناً فاناً پوری عمارت آگئی۔آگ اس قدر بھیانک تھی کہ اس نے فوری طور قریبی عمارتوں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ۔جس کی وجہ سے جائے واردات پرخوف و دہشت کا ماحول پھیل گیا اور لوگ چیختے چلاتے اپنے گھروں سے باہر آئے۔عینی شاہدین کے مطابق آگ اس قدر بھیانک تھی کہ دور دور سے اس کے شعلے نظرآرہے تھے۔ قریبی مکانوں سے لوگ گھروں سے باہرآئے اور اپنی سطح پرآگ بجھانے کی ناکام کوشش کی۔ اس کے فوراً بعد فائر اینڈ ایمرجنسی سروسز کو مطلع کیا گیا اور محکمہ کی کئی گاڑیاں اور درجنوں اہلکار جائے واردات پرپہنچ گئے اورآگ بجھانے کی کارروائی شروع کی۔آگ کی شدت کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا تھا کہ آگ بجھانے کیلئے محکمہ نے مزید گاڑیاں طلب کی گئیں اور مجموعی طور پر مختلف علاقوں سے ایک درجن کے قریب گاڑیاں جائے واردات پر پہنچ گئیں۔تاہم اس سے قبل ہی آگ تیزی سے پھیل گئی اور اس نے بڑے پیمانے پر تباہی مچا دی۔اس موقعہ پر افرا تفری کے عالم میںنزدیکی مکانوں کے مکینوں کو اپنے گھروں میں موجود قیمتی سامان باہر نکالتے ہوئے دیکھا گیا۔ کئی گھنٹوں کی مسلسل جدوجہد کے بعد آگ پر قابو پا لیا گیا ۔اس واردات میںغلام قارد لون کے ةوٹل غوثیہ ،محمد رفیق چیچو کے ہوٹل ارم کے ساتھ ساتھ حبیب اللہ لون ،شبیر احمد لون ،ڈاکٹر لطیف احمد اور عاول احمد چیچو پروزیر احمد چیچو کے گیٹ ہاوس بھی جل گئے ور ان میں موجود سامان خاکستر ہوگیا۔محکمہ فائر اینڈ ایمر جنسی سروسز کے ترجمان نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ آگ سے ہوئے نقصان کا فوری تخمینہ لگانا ممکن نہیں اور مکمل جائزہ لینے کے بعد ہی کوئی حتمی رائے قائم کی جاسکتی ہے۔انہوں نے بتایاآگ بجھانے کے دوران فائرسروس عملے کو سخت ترین مشکلات کا سامنا کرنا پڑا اور تقریبا4گھنٹے بعد آگ پر قابو پایا گیا۔انہوں نے بتایا کہ آگ بجھانے کیلئے حبہ کدل ،بابہ ڈیمب ،حضرت بل نہرو پارک ، بٹہ مالو ہیڈ کوارٹراور دیگر سٹیشنوں سے11گاڑیوں اور70 اہلکاروں کوکام پر لگایا گیا تھاجبکہ نہرو پارک Riverسٹیشن نے بھی آگ بجھانے کی کارروائی میں حصہ لیا ۔آگ لگنے کی وجوہات کا پتہ لگانے کیلئے پولیس نے کیس درج کرکے تحقیقات شروع کردی ہے اور آگ سے ہوئے نقصان کا تخمینہ لگایا جارہا ہے ۔دریں اثناءکشمیر ہوٹل اینڈ ریسٹورنٹ ایسوسی ایشن نے آتشزدگی کی اس واردات پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے سرکار سے اپیل کی ہے کہ متاثرین کی فوری باز آباد کاری کی جائے ۔