کھنموہ جھڑپ :مزاحمتی جماعتوں کا جاں بحق ہوئے جنگجوئوں کو خراج عقیدت

؎سرینگر//حریت (گ)،حریت (ع)، تحریک حریت،مسلم لیگ،مسلم کانفرنس ،محاز آزادی، انٹرنیشنل فورم فار جسٹس ، تحریک استقامت ، تحریک استقلال، مسلم خواتین مرکز اور ینگ مینز لیگ نے کھنموہ میں جاں بحق ہوئے جنگجوئوں کو خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت کے حکمران پچھلی 7دہائیوں سے جموں و کشمیر کے لوگوں کوطاقت کی بنیاد پرزیر کرنے کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔ حریت (گ)چیئرمین سید علی گیلانی نے خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا کہ پوری قوم ان جوانوں کی قربانیوں کی امانت دار ہے اور قوم کے ہر فرد کو شعور کی پختگی اور ضمیر کی بیداری کے ساتھ اپنے سرفروشوں کے لہو کی حفاظت کرنے کیلئے عزم کرنا چاہئے۔ گیلانی نے اس امر پر افسوس کا اظہار کیا کہ بھارت حق خودارادیت کی جائز سیاسی تحریک کو فوجی طاقت کے ذریعے دبانے کی کارروائیوں کے ذریعے یہاں قبرستان کی خاموشی قائم کرنے کو امن کا نام دینے کی ضد پر اڑا ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کے انتظامی نمائندے ایک طرف خون ناحق پر افسوس کا اظہار کرتے ہیں اور دوسری طرف اسی فوج کے ان’بہادرانہ‘ کارناموں پر جشن مناکر انہیں مبارکباد بھی دیتے ہیں۔انہوںنے مزیدکہا کہ جو قوم روزانہ اپنے لخت جگروں کی لاشوں کو کندھا دینے پر مجبور کی جاتی رہی ہو، جس کے گروپیش میں تباہی وبربادی کے ہولناک مناظر دہرائے جاتے ہوں، اُس قوم کو ہر لمحہ اپنے آپ کا محاسبہ کرکے یہ دیکھنا چاہیے کہ ہمارے کسی عمل سے ہمارے دشمن کی پکڑ مضبوط تو نہیں ہورہی ہے۔حریت (ع)نے قربانیوں کو رواں تحریک آزادی کا انمول سرمایہ قرار دیا ہے۔ بیان میں فورسز کے ہاتھوں جاں بحق ہوئے عسکریت پسندوں کی نعشوں کے ساتھ بے حرمتی اور ان کے جسم کو بے دردی کے ساتھ جلانے کی مذمت کرتے ہوئے اسے انسانی حقوق کا بدتدین نمونہ قرار دیا۔انہوں نے کہا کہ نعشوں کے ساتھ اس طرح کا بہیمانہ برتائو حد درجہ غیر انسانی اور مسلمہ اخلاقی اصولوں کے خلاف ہے۔ بیان میں یہ بات زور دے کر کہی گئی کہ جس بلند نصب العین کیلئے ہمارے نوجوان قربانیوں کے بے مثال تاریخ رقم کر رہے ہیں اْسے کسی بھی قیمت پر نظروں سے اوجھل نہیں ہونے دیا جائے گااور قیادت اور قوم حق و صداقت پر مبنی جائز جد وجہد کی آبیاری اور اسے پائے تکمیل تک لے جانے کیلئے عہد بستہ ہے۔بیان میں کہا گیا کہ دیرینہ مسئلہ کشمیر کے تعلق سے حکومت ہند کی ہٹ دھرمی ، توسیع پسندانہ عزائم پر مبنی سیاست کاری سے عبارت جارحانہ رویے اور کشمیری نوجوانوں کو پشت بہ دیوار کرنے کی مذموم پالیسیوں کی وجہ سے ہمارے نوجوان اپنے پیدائشی حق کیلئے جانوں کا نذرانہ پیش کررہیں ہے۔  تحریک حریت چیئرمین محمد اشرف صحرائی نے خراج عقیدت ادا کرتے ہوئے کہا کہ فورسز کی انسانیت سوز کارروائی انتہائی افسوسناک ہے ۔انہوں نے کہا کہ معرکہ آرائی کے دوران آتش گیر مادہ استعمال کرکے جاں بحق ہوئے جوانوں کی میتوں کو جلانا انتہائی بربریت کا مظاہرہ ہے۔ صحرائی نے کہا کہ فورسز کی یہ کارروائی طے شدہ انسانی، اخلاقی، قانونی اور بین الاقوامی جنگی قوانین کی کھلی خلاف ورزی ہے۔انہوں نے کہا کہ فورسز نے کھنموہ جھڑپ کے دوران کیمیائی آتش گیر مادہ کا استعمال کرکیظلم و جبر کا سخت مظاہرہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ جنگ کے بھی کچھ اصول وضوابط ہوتے ہیں۔ اگر کسی کے ساتھ مقابلہ ہو اور لڑائی میں کوئی مارا جائے تو اس کی لاش کو مسخ کرنے کا کوئی بھی جواز نہیں ہوتا ہے۔ بیان کے مطابق بھارت نے سلامتی کونسل کے تسلیم شدہ انسانی حقوق کے چارٹر کو اگرچہ تسلیم کیا ہے، مگر عملی طور پر بھارت بین الاقوامی قوانین، اصولوں اور ضوابط سے انحراف کرتے ہوئے جموں کشمیر کے خطے میں ایسی انسانیت سوز کارروائیاں انجام دے کر اخلاق اور انسانیت کو شرمسار کردیا ہے۔انہوں نے کہا کہ ثاقب شفیع ڈار کے ساتھ فورسز کی لڑائی اس کے جینے کی صورت میں تسلیم کی جاسکتی ہے، مگر جان بحق ہونے کے بعد ہر ایک شخص کی لاش (چاہے وہ مسلمان ہو، سکھ ہو، عیسائی ہو یا بودھ ہو) قابل احترام ہوتی ہے۔ مرے ہوئے شخص کی لوش کو کسی بھی صورت میں مسخ کرنے کا کوئی انسانی یا اخلاقی جواز نہیں ہے، مگر افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ بھارتی فورسز نے دونوں لاشوں کو مسخ کردیا تھا۔ صحرائی نے کہا کہ ایسی وحشیانہ کارروائیاں پوری قوم کے لیے دلسوزی کا باعث ہیں اور پوری قوم لاشوں کو مسخ کرنے اور جلانے پر سراپا احتجاج ہے۔مسلم لیگ نے خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ ہندوستان جموں کشمیر کے اندر اس وقت جس پالیسی پر عمل پیرا ہے اس کا مقصد صرف اور صرف کشمیریوں کی نسل کشی ہے اور ان کی مبنی بر حق آواز کو طاقت کے بل بوتے پر دبانا ہے کیونکہ ہندوستان سیاسی سطح پر جموں کشمیر کے اندر ناکام ہوچکا ہے اور اس کی سیاسی بالادستی کمزور ہوچکی ہے لہذا وہ اب ایسے گھناؤنے جرائم کا مرتکب ہورہا ہے جن کا آج کے جمہوری دور میں کوئی تصور ہی نہیں ہے۔ ترجمان نے کہا کہ قوم ان عظیم جوانوں کی مرہون منت ہے ۔مسلم کانفرنس چیئرمین شبیر احمد ڈار ،محاز آزادی صدر محمد اقبال میر، انٹرنیشنل فورم فار جسٹس کے چیئرمین محمد احسن اونتو،تحریک استقامت کے چیئرمین غلام نبی وار، تحریک استقلال کے چیئرمین غلام نبی ودسیم، ینگ مینز لیگ کے چیئرمین امتیاز احمد ریشی اور مسلم خواتین مرکز کی چیئرپرسن یاسمین راجہ نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ اس معرکہ میں جس طرح سے کیمیائی ہتھیاروں گا استعمال کیا گیا وہ اقوام متحدہ کے طے شدہ اصولوں کے خلاف ہے۔دریں اثناء  حریت(ع) چیرمین میرواعظ عمر فاروق کی ہدایت پر حریت کا ایک وفدنے شوپیاں ، پلوامہ، آری بل ، نازنین پورہ اور راجپورہ جاکر حالیہ ایام میں جاں بحق ہوئے جنگجوئوں کے لواحقین سے یکجہتی کا اظہار کیا۔وفد غلام نبی نجار، عبد المجید وانی، جعفر کشمیری اور محمد اکبر پر مشتمل تھا۔ حریت قیادت کی جانب سے جاں بحق ہوئے جنگجوئوں کو خراج عقیدت ادا کیا گیا اور ان کے لواحقین کے ساتھ بھر پور یکجہتی کا اظہار کیا گیا۔ اس موقعہ پر میرواعظ نے ٹیلیفون کے ذریعے سوگوارکنبوں کے ساتھ تعزیت کا اظہار کیا اور کہا کہ قربیانیاں ہماری رواں تحریک کا گراں قدر سرمایہ ہے اور اس کی ہر حال میں حفاظت کی جائے گی۔ وفد نے راجپورہ جاکر گذشتہ دنوں وفات پاگئے سماجی رہنما مرحوم عبد السلام راجپوری کے لواحقین کے ساتھ بھی تعزیت اور یکجہتی کا اظہار کیا۔