کھمبہ گرنے سے بجلی ملازم دوران ڈیوٹی لقمہ اجل

بارہمولہ //تجر شریف سوپور کا ایک اور عارضی ملازم ترسیلی لائن کی مرمت کے دوران لقمہ اجل بن گیا ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ فیروز احمد شیخ ولد مرحوم غلام نبی شیخ ساکنہ تجر شریف جمعہ کوہرون زینہ گیر علاقے میں بجلی کھمبے پر چڑھ کر ترسیلی لائن کی مرمت کر رہا تھا تو اس دوران وہ اچانک بجلی کھمبے سے نیچے گر گیا تاہم اُس کے فوراًً بعد بجلی کھمبا بھی غیر متوقع طور پر اُس کے اوپر گر آیا جسکی وجہ سے مذکورہ ملازم شدید زخمی ہو گیا۔ زخمی ملازم کو اگرچہ مقامی لوگوں نے سب ضلع اسپتال سوپور پہنچایا تاہم ڈاکٹروں نے اُسے مردہ قرار دیا یہ خبر جب فیروز احمدکے آبائی گائوں تجر شریف پہنچی تو وہاںصف ماتم بچھ گئی ۔بعد ازاں اْسکی میت کو پْرنم آنکھوں کے ساتھ سپرد خاک کیا گیا۔ اس دوران اہل خانہ نے متعلقہ محکمہ پر الزام عائد کرتے ہوئے کرتے ہوئے بتایا کہ یہ حادثہ محکمہ کی لاپروئی کی وجہ سے پیش آیا ہے ۔اس سلسلے میں پولیس نے کیس درج کر کے تحقیقات شروع کر دی ہے ۔محکمہ بجلی کے اسٹنٹ ایگزیٹو انجینئر شوکت احمد نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ حادثہ بجلی کھمبے کے گرنے کی وجہ سے پیش آیا ہے ۔انہوں نے کہا کہ حادثہ کے بعد اگرچہ مذکورہ ملازم کو شدید زخمی حالت میں ہسپتال پہنچایا گیا تاہم وہاں وہ زخموں کی تاب نہ لا کر چل بسا ۔بلاک میڈیکل افسر سوپور ڈاکٹر سمیر نے بتایا کہ مذکورہ ملازم کے سر پر گہری چوٹیں آئی تھیں اور اس نے ہسپتال پہنچنے سے قبل آخری سانس لی تھی ۔ محکمہ کے ذرائع نے بتایا کہ زیادہ تر ملازمین کوبجلی کی ترسیلی لائنوں کو ٹھیک کرنے کے متعلق کوئی جانکاری ہی نہیں ہے لیکن اس کے باوجود بھی ان سے کام لیا جاتا ہے۔ایسے ملازمین کو پہلے ضلع سطح پر تربیتی مراکز میںجانکاری دینے کی ضرورت تھی اور اس کے بعد انہیں کام پر لگایا جاسکتا تھا۔ذرائع نے بتایاکہ چند برس قبل حکومت نے پی ڈی سی اور پی ڈی ڈی ملازمین کی تربیت کیلئے بگلیار فسٹ پروجیکٹ میں ایک تربیتی ادارہ قائم کرنے کی تجویز پیش کی اگرچہ تربیتی ادارہ قائم کیا گیا لیکن وہاں عملے کی تعیناتی عمل میں نہیں لائی گئی جس کی وجہ سے یہ ادارہ بند پڑا ہے۔سرکار نے اگرچہ پچھلے دنوں یہ علان کیا تھا کہ ایسے ملازمین کو تربیت دی جائے گئی لیکن ابھی تک ایک بھی ملازم کو تربیت نہیں دی گئی جس سے ملازمین کی ہلاکتوں کا سلسلہ آئے روز جاری رہتا ہے ۔دریں ثناء وزیر علیٰ محبوبہ مفتی نے ٹویٹ پر فیروز احمد شیخ کے موت پر غم کا اظہار کیا اور اُن کے خاندان کے ساتھ اظہارے ہمدردی کی۔