کھاسی پورہ ترال میں سکھ نوجوان کا قتل

ترال//ترال کے کھاسی پورہ علاقے میں نا معلوم بندوق برداروں نے ایک مقامی سرپنچ کے بھائی کو گھر کے نزیک گولی مار کر ابدی نید سلادیا۔اس دوران فورسز نے واقعے کے بعد گائوںکو محاصرے میں لے کر حملہ آوروں کی تلاش شروع کر دی۔جبکہ پولیس نے واقعے کے حوالے سے ایک کیس درج کر کے تحقیقات شروع کی۔جنوبی کشمیر کے قصبہ ترال سے 4کلو میٹر دورواقع کھاسی پورہ ترال میںجمعہ کی صبح 11:30پر اس وقت خوف و دہشت کا ماحول پیدا ہوا جب علاقے میںنا معلوم بندوق برداروں نے 30سالہ سمرن جیت سنگھ ولد مرحوم نانک سنگھ کو اس وقت گولی مار کر ابدی نیند سلا دیا جب وہ ترال سے واپس اپنے گھر کی طرف جا رہا تھا ۔ نا معلوم افراد نے گھر سے چند گز کی دوری پر سمرن جیت سنگھ پر گولی ماردی جس کے نتیجے میں وہ بری طرح زخمی ہوا۔اس دوران اگر چہ مذکورہ نوجوان کو فوری طور ترال اسپتال منتقل کیا گیاتاہم ڈاکٹروںنے انہیں نازک حالت میںسرینگر منتقل کیا جہاں وہ بعد میں زخموں کی تاب نہ لا کر دم توڑ بیٹھا۔بتایا جاتا ہے کہ مہلوک نوجوان علاقے کے سرپنچ کا بھائی ہے تاہم یہ معلوم نہیں ہو سکا آخر انہیں کس جرم کی سزا میں موت کی نیند سلا دیا گیا۔واقعے کے فوراً بعد فوج سی آر پی ایف اور پولیس نے علاقے میںپہنچ کر حملہ آوروں کی تلاش شروع کر دی جبکہ ہلاکت کی وجہ سے علاقے میںزبردست خوف و دہشت کا ماحول پیدا ہوا ہے۔ ۔خیال رہے ترال میںپہلی بار گزشتہ 20سال میںبندوق برادروںکے ہاتھوںکسی عام سکھ فرقے کے شخص کو گولی مار کر ہلاک کیا گیا۔ پولیس نے واقعے کے حوالے سے ایک کیس درج کر کے تحقیقات شروع کی ہے