کپوارہ میں ژالہ باری سے فصلوں اور میوہ باغات کونقصان

سرینگر//نیشنل کانفرنس کے رکن پارلیمان محمد اکبر لون ، سینئر لیڈر چودھری محمد رمضان ،شمالی زون صدر جاوید احمد ڈار اور ضلع صدر کپوارہ قیصر جمشید لون نے کپوارہ کے مختلف علاقوں میں ژالہ باری سے ہوئے نقصان پر تشویش کا اظہارکرتے ہوئے ہے کہاکہ ضلع میں فصلیں اور میوہ باغات کو زبردست نقصان پہنچا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ژالہ باری سے فصلوں ،میوہ باغات اور ساگزاروں کوبہت زیادہ نقصان پہنچا ہے۔ادھر پیپلز کانفرنس کے چیئرمین سجاد غنی لون نے ضلع کپواڑہ کے ژالہ باری سے متاثرہ علاقوں کا دورہ کیا، جہاں شدید ژالہ باری سے کسانوں اور باغبانوں کو بڑے پیمانے پر نقصان ہواہے۔نیشنل کانفرنس لیڈران کا کہنا ہے کہ متاثرہ علاقوں کے لوگ کھیتی باڑی اور محنت و مشقت کرکے روزی روٹی کماتے ہیںلیکن سب کچھ تباہ ہونے سے ان کی امیدیں خاک میں مل گئی ہیں۔ انہوں نے کہاکہ حکومت کواس نقصان پر متاثرین کے ساتھ انصاف کرنا چاہئے ۔ انہوں نے انتظامیہ سے اپیل کی کہ فوری طور پر ٹیمیں تشکیل دیکر نقصانات کا تخمینہ لگاکر متاثرین کی امداد کی جائے۔ دریں اثناء محمد اکبر لون، سینئر پارٹی لیڈران میر سیف اللہ، قیصر جمشید لون، ڈاکٹر بشیر احمد ویری، ایڈوکیٹ عبدالمجید لارمی، ایڈوکیٹ شوکت حسین گنائی، جگدیش سنگھ آزاد، پیر آفاق احمد، عمران نبی ڈار، سجاد شاہین اور دیگر کئی لیڈران پارٹی جنرل سکریٹری  علی محمد ساگر سے ملاقی ہوئے اور انہیں اپنے علاقوں میں پارٹی سرگرمیوں اور پارٹی پروگراموں کے علاوہ لوگوں کے مسائل و مشکلات سے بھی آگاہ کیا۔ جنرل سکریٹری نے پارٹی سے وابستہ افراد پر زور دیا کہ وہ پارٹی پروگراموں کے عین مطابق کام کریں اور لوگوں کیساتھ قریبی رابطہ رکھیں۔ اُن کا کہنا تھا کہ لوگوں کے مسائل و مشکلات اُجاگر کرنا اور ان کا سدباب کرانا ہماری اوالین ترجیح ہونی چاہئے۔ادھر سجاد غنی لون نے ضلع کپواڑہ کے ژالہ باری سے متاثرہ علاقوں کا دورہ کیا، جہاں شدید ژالہ باری سے کسانوں اور باغبانوں کو بڑے پیمانے پر نقصان ہواہے۔ لون نے ضلع کپواڑہ کے جن علاقوں کا دورہ کیا ان میں قلمونہ ، پچکوٹ ، منجگام ، ملک پورہ ، آلوسہ اور پنجگام شامل ہیں، جہاں انہوں نے کھڑی فصلوں بالخصوص دھان کے کھیتوں اور میوہ باغات کو ہوئے نقصان کا جائزہ لیا۔ لون نے کسانوں کے ساتھ ہمدردی کا اظہار کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ژالہ باری نے کسانوں کی روزی روٹی کو شدید دھچکا پہنچایاہے۔  انہوں نے کہا کہ اس نا گہانی آفت سے متاثر ہونے والے افراد کی روزی پوری طرح ان کی فصلوں پر منحصر ہے اور اس طرح بڑے پیمانے پر تباہی کے ساتھ ، کسانوں کو بھاری مالی نقصان اٹھانا پڑا ہے۔ لون نے علاقے میں ہونے والے نقصانات کا فوری جائزہ لینے کا مطالبہ کیا ہے اور انتظامیہ پر زور دیا کہ وہ متاثرہ کسانوں کو جلد از جلد مناسب معاوضہ فراہم کرے۔ انہوں نے کہاکہ وہ لوگ جن کا ذریعہ روزگار ژالہ باری اور طوفان سے متاثر ہوا ہے، وہ پہلے ہی غربت کے شکار ہیں اور اگر ان کو فوری طور پر مدد فراہم نہ کی گئی تو ان کے اہل خانہ کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔  انتظامیہ کو متاثرہ کسانوں کو جنگی بنیادوں پر مناسب امداد اور معاوضہ فراہم کرنا چاہیے۔