کپوارہ میں نقب زنوں کاگروہ بے نقاب

کپوارہ//کپوارہ میں پولیس نے ایک اہم پیش رفت کے طور نقب زنوں کے ایک گروہ کو بے نقاب کرکے لاکھوں روپے کامال مسروقہ برآمد کیا۔کپوارہ کے ایس ایس پی یوگل منہاس نے تفصیلات فراہم کرتے ہوئے بتایا کہ کپوارہ کے تین الگ الگ مقامات جن میں ہری،مین قصبہ کپوارہ اوربرن واری سے شکایات موصول ہوئی کہ نقب زنوں نے وہاں لوگوں کے گھروں اوردکانوں میں چوری کرکے لاکھوں روپے کاسامان اُڑالیا۔پولیس نے معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے ایک کیس زیرایف آئی آر نمبر 23,33,34/2022تحت دفعہ457,380درج  کرکے تحقیقات شروع کردی۔ایس ایس پی کے مطابق ہر نقب زنی کی نسبت پولیس نے تفتیش شروع کی جس کے بعد 6مشتبہ افراد کو گرفتار کیا گیا جن کی شناخت منظور احمد المعروف چھوٹا دانش ،علی محمد پیر  ،آزاد احمد وانی  ،عبد الرشید ملک ،ارشاد احمد چوپان  اور مدثر احمد لون طور ہوئی ۔دوران تفتیش گرفتار کئے گئے افراد نے اس بات کا اعتراف کیا کہ وہ نقب زنی میں ملو ث ہیں جن میں 2لاکھ روپیہ کے زیوارت ،1,50لاکھ روپیہ کے تانبے کے برتن ،50ہزار روپے مالیت کا لیپ ٹاپ ،انڈکس بیٹری اور سگریٹ کے ڈبے شامل ہیں ۔ایس ایس پی کا کہنا ہے کہ پولیس نے ایک خصوصی ٹیم ایس ایچ او کپوارہ رفیق احمد لون کی قیادت میں تشکیل دی اور اس کی نگرانی ایڈیشنل ایس پی کپوارہ پردیپ سنگھ اور ڈی ایس پی ہیڈ کواٹر راشد یونس کے ذمہ تھی ۔پولیس کا مزید کہنا ہے کہ گرفتار کئے گئے نقب زنو ں سے مال مسروقہ بر آمد کیا گیا تاہم پولیس کی تفتیش جاری ہے اور اس کیس میں مزید گرفتاریا ں متوقع ہیں ۔ایس ایس پی یوگل منہا س کا کہنا ہے کہ پولیس جرائم پیشہ افراد کے خلاف اپنی کاروائیاں جاری رکھے گی کیوںکہ پولیس کا مقصد ہی یہ ہے کہ عام لوگو ں کو تحفظ فراہم کیا جائے ۔کپوارہ پولیس کی اس کاروائی پر لوگو ں نے راحت کی سانس لی کیونکہ نقب زنو ں نے عام لوگوں کا جینا حرام کر دیا تھا ۔