کپوارہ میں بجلی کابحران کرناہ سے لیکر لولاب تک لوگ محکمہ سے نالا ں

اشرف چراغ

کپوارہ// کپوارہ ضلع میں دو گرڈ اسٹیشن قائم ہونے کے باجود بھی بجلی کا سخت بحران ہے جس کے نتیجے میں کرناہ سے لیکر قاضی آ باد تک لوگ محکمہ بجلی سے نالا ں ہیں ۔ضلع میں اس وقت دو گرڈ اسٹیشن قائم ہیں، تاہم آرم پوری گرڈ اسٹیشن کے تحت آنے والا خمریال فیڈر اورر لوڈ ہوتا ہے جس کی وجہ سے وادی لولاب کے متعدد علاقوں میں بجلی سپلائی میں بار بار خلل پڑ جاتا ہے ۔

 

لولاب کے متعدد علاقوں کے لوگو ں کا کہنا ہے کہ یہ سلسلہ کئی برسو ں سے جاری ہے اور اس سلسلہ میں محکمہ بجلی کے اعلیٰ حکام کو بھی با خبر کیا گیاہے لیکن تا حال صورتحال جو ں کی تو ں ہے ۔اس دوران ہلمت پورہ ،ہایہامہ ،سلکوٹ ،گلگام ،باتر گام ،آورہ اور دیگر علاقوں کے لوگو ں کا کہنا ہے کہ ان کے علاقوں میں بھی بجلی کی عدم دستیابی کی وجہ سے لوگ تنگ آ چکے ہیں اور بار بار کی کٹوٹی سے صارفین کو سخت مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے جبکہ کپوارہ قصبہ اور دیگر علاقوں کے تاجرو ں کا کہنا ہے کہ بجلی کی بار بار کٹوتی کی وجہ سے ان کا کاروبار بھی بری طرح سے متا ثرہو رہا ہے ۔اس دوران ویلگام گرڈ اسٹیشن کے تحت آنے والے علاقوں میں بجلی کی ابتر صورتحال سے صارفین سخت نالا ں ہیں ۔ویلگام گرڈ اسٹیشن کے ایک فیڈر سے اس وقت 7ریسونگ اسٹیشن منسلک ہیں، جن میں کرالہ پورہ ،تارت پورہ ،کاری ہامہ ،ہری ترہگام ،کیرن ،کرناہ اور راوت پورہ شامل ہیں ،جن کوبجلی سپلائی فراہم کی جاتی ہے لیکن ایک ہی فیڈر پر7ریسونگ اسٹیشن اکثر و بیشتر اوور لوڈ ہوتے ہیں جس کی وجہ سے ان علاقوں کے دیہات میں بجلی کی بار بار کٹوتی سے صارفین تنگ آچکے ہیں ۔کیرن ،کرناہ ،کرالہ پورہ ،ترہگام ،کاری ہامہ کے ملحقہ علاقوں کے لوگو ں کا کہنا ہے کہ بھاری فیس کی ادائیگی کے باجود بھی انہیں معقول بجلی سپلائی فراہم نہیں کی جاتی ہے ۔لوگو ں کا کہنا ہے موسم سرما کے شیڈول کے تحت انہیں قدرے بہتر بجلی سپلائی فراہم کی جاتی تھی لیکن موسم بہار شروع ہوتے ہی محکمہ نے ایک انوکھا بجلی شیڈول جاری کر دیا اور دن میں 4یا 5گھنٹہ کے وقفے کے بعد ان علاقوں کو بجلی سپلائی فراہم کی جاتی ہے اور محکمہ کے مرتب شدہ بجلی شیڈول کے با جود بھی بار بار بجلی سپلائی میں کٹوتی کی جاتی ہے ۔لوگو ں کا کہنا ہے کہ ویلگام گریڈ اسٹیشن میں50میگاواٹ بجلی ٹرانسفارمر سے ان علاقوں کو بجلی فراہم کی جاتی ہے لیکن بار بار اوور لوڈ کی وجہ سے محکمہ نے ایک اضافی 50میگا واٹ ٹرانسفارمر منظور کیا اور بجلی ٹرانسفارمر نصب کرنے کا کام گزشتہ 6ماہ سے جاری ہے لیکن ابھی تک اضافی 50میگا واٹ بجلی ٹرانسفار مر کو نصب کرنے کاکام سست رفتاری سے جاری ہے ۔لوگو ں کا کہنا ہے کہ اگر اس بجلی ٹرانسفارمر کو فوری طور نصب کیا جاتا تو صارفین کو بار بار بجلی کٹوتی کا سامنا نہیں کرنا پڑتا ۔صارفین کا یہ بھی کہنا ہے کہ کرالہ پورہ فیڈر کے 7ریسونگ اسٹیشنو ںکی 33kvترسیلی لائن کی قوت برداشت ختم ہو چکی ہے جس کی وجہ سے ویلگام گریڈ اسٹیشن اوور لوڈ ہوتا ہے نتیجے کے طور بجلی صارفین کو محکمہ کے شیڈول کے علاوہ بجلی کٹوتی کا سامنا کرنا پڑتا ہے ۔لوگو ں نے ضلع انتظامیہ کے ساتھ ساتھ محکمہ بجلی کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ لوگو ں کو معقول بجلی سپلائی کو یقینی بنانے کے لئے اقدامات اٹھائیں ۔