کٹھوعہ میں مقدمات کے متبادل حل کیلئے مرکز کا افتتاح

 کٹھوعہ //جموں وکشمیر ہائی کورٹ کے چیف جسٹس، جسٹس بدر دریز احمد نے ڈسٹرکٹ کورٹ کمپلیکس کٹھوعہ میں اے ڈی آر یعنی مقدمات کے متبادل حل کے لئے مرکز کا ضلع کٹھوعہ کے ایڈمنسٹریٹو جج جسٹس جنک راج کوتوال اور ضلع کٹھوعہ سے تعلق رکھنے والے جسٹس سنجیو کمار شکلا کی موجودگی میں افتتاح کیا۔اے ڈی آر عمارت ایک کروڑ22 لاکھ روپے کی لاگت سے تعمیر کی ھئی ہے اور اس میں4 میڈیشن کیوب، ایک کانفرنس ہال، پینٹری، آفسرس روم اور جدید سہولیات سے آراستہ دو واش روم ہیں۔اس موقعہ پر حاضرین سے خطاب کرتے ہوئے چیف جسٹس بدر دریز احمد نے کہا کہ معاملات کے متبادل حل متعلقین کو معاملات کے حل کے لئے بہترین میکانزم فراہم کرنا ہے۔ انہوں نے اُمید ظاہر کی کہ اے ڈی آر مرکز معاملات کا افہام و تفہیم سے حل کے لئے موافق ماحول فراہم کرے گا۔جسٹس جنک راج گپتا نے اس موقعہ پر کہا کہ افہام و تفہیم کے ذریعے مقدمات کے حل سے مقدمہ بازی اور اس کے طویل پیچیدہ عمل سے چھٹکارہ پایا جاسکتا ہے اس لئے باہمی بات چیت ہی معاملات کو حل کرنے کا ذریعہ بنانے کی حوصلہ افزائی کی جانی چاہئے۔جسٹس سنجیو کمار نے مقدمات کے متبادل حل، یعنی اے ڈی آر کوایک اہم اور موثر اضافہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس سے مقدمات کے نپٹارے میں طوالت میں کافی کمی آسکتی ہے۔کٹھوعہ بار ایسوسی ایشن کے صدر ارویندر کمار گپتا نے ضلع میں علدیہ کے بنیادی ڈھانچہ سے متعلق مسائل اور وکلاء کو درپیش مسائل کو اُجاگر کیا۔پرنسپل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنز جج کٹھوعہ سنجیو گپتا نے مندوبین اور مہمانوں کا خیر مقدم کیا۔اس موقعہ پر رجسٹرار جنرل ہائی کورٹ سنجے دھر، چیف جسٹس کے پرنسپل سیکرٹری، عدلیہ اور ضلع انتظامیہ سے وابستہ اعلیٰ افسران بھی موجود تھے۔