کوویڈ قوائد و ضوابط میں تبدیلی

مہلک بیماریوں میں مبتلا گھر قررنطین نہیں ہونگے

 
سرینگر //مرکزی وزارت صحت و سماجی بہبود کی جانب سے کم علامات والے گھر قرنطین رہنے والوں کیلئے نئی گائیڈ لائنز جاری کی گئی ہیں۔ نئی گائیڈ لائنز کے مطابق’’ متاثرین ، جو گھر قرنطین ہوں، 10روز کے بعد اپنی ائیسولیشن ختم کرسکتے ہیں،بشرطیکہ کہ انکی علامات مزید کم ہوئی ہوں یالگاتار 3دن تک انہیں بخار نہیں چڑھا ہو،انہیں پھر دوبارہ ٹیسٹ کرانے کی ضرورت نہیں ہوگی‘‘۔ گھر قرنطین کیلئے وضع قوائد و ضوابط میں لائی گئی تبدیلی کے مطابق ایڈز، کینسر اور دیگر مہلک بیماریوں میں مبتلا مریضوں کو اب گھروں میں قرنطین نہیں کیا جائے گا ۔60سال سے زیادہ عمر کے ہائی بلڈ پریشر، شوگر، امراض قلب،پھیپھڑوں، جگر اور گردوں کے مرض میں مبتلا افراد کو متعلقہ میڈیکل آفیسر کے معائنہ کے بعد ہی گھروں میں قرنطین رہنے کی اجازت دی جائے گی۔
وازت صحت و سماجی بہبود کے شعبہ کیمونٹی میڈیشن کی جانب سے جارے گئے نئے قوائد و ضوابط میں بتایا گیا ہے کہ غیر علامتی اور ہلکی علامت والے متاثرین کے رابطے میں آنے والے اور انکے اہلخانہ کو Hydroxychloroquinine prophylayaxisکی دوائی قوائد و ضوابط کے تحت دی جائے گی۔ گھر قرنطین رہنے والے مریضوں کو حلف نامہ بھی جمع کرنا ہوگا جس میں آئیسولیشن کے دوران قوائد و ضوابط پر عمل کرنے کی یقین دہانی کرائی جائے۔ غیر علامتی یا ہلکی علامت والے متاثرین کی حالت میں ابتری کی صورت میں ڈاکٹری مدد کیلئے میڈیکل آفیسران کے رابطے میں رہیں گے ۔ نئے قوائد و ضوابط میں مزید بتایا گیا ہے کہ سانس لینے میں تکلیف ، جسم میں آکسیجن کی مقدار میں کمی، چھاتی میں مسلسل دبائو یا سخت درد، ذہنی پریشانی،ہکلانا، ٹانگوں اور بازوں میں کمزوری اور ہونٹوں اور چہرے کے رنگ میں تبدیلی کی صورت میں علاج کرنے والے ڈاکٹر سے رابطہ کرسکتے ہیں۔
قوائد و ضوابط میںمتعلقہ ریاستوں اور مرکزی زیر انتظام علاقوں کی انتظامیہ سے کہا گیا ہے کہ وہ گھر قرنطین میں رہنے والے تمام مریضوں کی طبی صورتحال پر نظر رکھیں گے اور گھر قرنطین میں رہنے والے تمام مریضوں کی تفصیلات سرکاری پورٹل پر دستیاب رکھیں گے جبکہ متعلقہ افسران ریکارڈ اپڈیٹ کرنے کے کام پر نظر رکھیں گے۔ گھر قرنطین میں رہنے والے افرادکو اسپتال منتقل کرنے کی صورت میں 10دنوں یا 3دنوں تک بخار معمول پر ہونے کے بعد گھر روانہ کیا جائے گا جہاں اسکو مزید 7دنوں تک علیحدہ رہنے کی ہدایت دی جائے گی۔گھر میں قرنطین رہنے والے مریضوں کو 3سطح (3layer)والے ماسک پہنچے اور ہر 8گھنٹے کے بعد ماسک کو تبدیل کرنا ہوگا۔ جبکہ غیر علامتی یا ہلکی علامت والے مریض خود کو علیحدہ کمرے میں قرنطین کرنا ہوگا جہاں کسی کی رسائی ممکن نہ ہو، ہاتھ صاف کرنے کیلئے سینٹائزر یا صابن کا استعمال کرنا چاہئے۔ وزارت سماجی بہبود نے گھروں میں قرنطین رہنے والے لوگوں کو ہدایت دی ہے کہ وہ علاج کرنے والے میڈیکل آفیسر کی ہدایات پر عمل کرنے کے علاوہ ڈاکٹر کی جانب سے دی گئی ادویات کا استعمال کریں۔