کونسل میں دوسرے روز بھی ہنگامہ آرائی

سرینگر// قانون ساز کونسل میں دوسرے روز بھی ہنگامہ آرائی جاری رہا جس کے دوران اپوزیشن نے واک آوٹ کر کے ایوان قانون سازیہ کے باہر دھرنا دیا ۔ جی ایس ٹی پر خصوصی بحث کے دران کونسل میں دوسرے روز بھی ہنگامہ آرائی تلخ کلامی اور نعرہ بازی کا سلسلہ جاری رہا جس کے دوران2بار کونسل چیئرمین نے کاروائی کو ملتوی کیا۔ صبح جوں ہی کونسل کی کاروائی کا آغاز ہوا تو چیئرمین نے جی ایس ٹی پر پیش کی گئی قرار داد پر ممبران کو بحث کرنے کی دعوت دیتے دی۔ چیئرمین نے اشوک کھجوریہ کا نام جونہی پکارا تو اپوزیشن جماعتوں کے ممبران نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ روایت کے مطابق قرار داد پر پہلے اپوزیشن ممبران کو بولنے کی دعوت دینی چاہی تھی۔چیئرمین کونسل نے ممبران سے مخاطب ہوکر کہا کہ اپوزیشن نے اپنے نام نہیں دئیے ہیں،اس لئے حکمران جماعتوں کے ممبران کو موقعہ دیا گیا ہے۔اپوزیشن نے اس پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے واک آواٹ کیا۔ چیئرمین کی عدم موجودگی میں انکی نشست پر موجود اجات شترو سنگھ نے ایوان کے لیڈر اور وزیر نعیم اختر سے کہا کہ اپوزیشن باہر ہیں،اس لئے انہیں منانے کی کوشش کی جائے تاکہ وہ بھی ایوان کی کاروائی میں حصہ لئے سکیں۔نعیم اختر نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ وہ جی ایس ٹی پر اپوزیشن جماعتوں سمیت بحث کرنا چاہتے ہیں،اس لئے چیئرمین کونسل انہیں ذاتی طور پر منانے کیلئے گئے ہیں،تاکہ وہ ایوان میں پھر سے حاضر ہو۔اس موقعہ پر پر اجات شترو سنگھ نے5 منٹ کیلئے ایوان کی کاروائی کو معطل کیا۔10منٹ کے بعد جب اپوزیشن جماعتوں کے ممبران واپس ایوان میں داخل ہوئے اور انہوں نے گزشتہ روز پیش آئے واقعے پر ممبران سے معافی مانگنے کا مطالبہ کیا،تو پی ڈٰ پی کے یاسر ریشی اپنی نشست سے کھڑے ہوئے اور کہا کہ جو میری طرف کاغذ پھینکے گا میں اس کی طرف کرسی پھینکوں گا۔اس پر اپوزیشن جماعتوں کے ممبران سخت برہم ہوئے اور ایک بار پھر نعرہ بازی کرتے ہوئے واک آواٹ کیا۔اپوزیشن ممبران جن میں کانگریس کے غلام نبی مونگا، مظفر احمد پرے،نریش گپتا،رانی بلوریہ اور نیشنل کانفرنس کے سجاد احمد کچلو،شوکت احمد گنائی،قیصر جمشید لون، ڈکٹر شہناز گنائی اور آغا محمود کے علاوہ دیگر قانون ساز کونسل کے ممبران بھی موجود تھے، نے اسمبلی کے گیٹ پر دھرنا دیا۔چیئرمین کونسل نے بھی اپوزیشن کی عدم موجودگی کے ساتھ ہی4بجے تک ایوان کی کاروائی کو معطل کیا۔اسمبلی گیٹ پر دھرنا دیتے ہوئے اپوزیشن ممبران نے’’ ناگپور سرکار ہائے ہائے،گھنڈہ گردی نہیں چلے گی،ایوان کے تقدس کو بحال کر اور کولیشن سرکار ہائے ہائے‘‘ کے نعرے بلند کئے۔