کولگام جھڑپ ختم| 2ملی ٹینٹ جاں بحق

اننت ناگ //جنوبی ضلع کولگام کے چولگام گائوں میں مسلح تصادم آرائی اختتام پذیر ہوئی جس دوان حزب کمانڈر اپنے ساتھی سمیت جاں بحق ہو گیا ۔ بمنہ سرینگر شوٹ آوٹ میں ہلاک جنگجو کی پولیس نے کھریو پانپور کے رہائشی کے بطور کرتے ہوئے دعویٰ کیا کہ مہلوک جنگجو انصار غزوۃالہند سے وابستہ تھا اور اسے فدائین حملہ کرنے پر معمور کیا گیا تھا ۔ آئی جی پی کشمیر وجے کمار نے حزب کمانڈر کی ہلاکت کو بڑی کامیابی سے تعبیر کرتے ہوئے بتایا کہ مہلوک کمانڈر سیکورٹی فورسز اور پولیس کیلئے انتہائی مطلوب تھا ۔ شام دیر گئے علاقے میں ا ٓپریشن معطل کیا گیا جس کے بعد محاصرے میں پھنسے حزب کمانڈر کے اہل خانہ کو طلب کیا گیا جنہوں نے شیراز مولوی کو کئی بار ہتھیار ڈال کر خود سپردگی کرنے کی اپیل کی تاہم انہوں نے گھروالوں کی بات نہیںما نی جس کے بعد علاقے میں جمعہ کی صبح ایک مرتبہ پھر جھڑپ ہوئی اور جھڑپ کے دوران دوسرا جنگجو بھی جاں بحق ہو گیا جس کے ساتھ ہی جھڑپ دو جنگجوئوںکی ہلاکت کے ساتھ اختتام پذیر ہوئی ۔اس تصادم آرائی میں ایک رہائشی مکان مکمل طور پر تباہ ہوا۔ وجے کمار نے بتایا کہ مہلوک جنگجوئوں کی شناخت شیراز مولوی ( حزب المجاہدین ضلع کمانڈر) اور دوسرا یاور بٹ کے بطور ہوئی ہے۔آئی جی پی کے مطابق شیراز مولوی 2016 سے سرگرم تھااور دونوں سیکورٹی فورسز پر حملوں، عام شہریوں کو تشدد کا نشانہ بنانے کی کارروائیوں اور دیگر تخریبی سرگرمیوں میں قانون نافذ کرنے والے ادارے کو انتہائی مطلوب تھے۔ادھر انسپکٹر جنرل کا کہنا ہے کہ سرینگر کے بمنہ علاقے میں جمعرات کی شب ایک مختصر تصادم میں ہلاک ہونے والا جنگجو لیتہ پورہ حملے کے ایک ملزم کا رشتہ دار تھا۔انہوں نے مہلوک جنگجو کی شناخت عامر ریاض ساکن کھریو پلوامہ کے طور پر کی، جو مجاہدین غزوۃ الہند نامی تنظیم سے وابستہ تھا۔ان کا کہنا تھا کہ مہلوک جنگجو کو فدائین حملے انجام کی ذمہ داری سونپی گئی تھی۔موصوف نے یہ جانکاری جمعے کے روز اپنے ایک ٹویٹ کے ذریعے فراہم کی۔ وجے کمار نے کہا کہ امسال ابھی تک کامیاب آپریشنوںمیں 133جنگجو ئوں کو ہلاک کیا گیا جن میںکئی اعلیٰ کمانڈر بھی شامل تھے ۔