کورونا کی ممکنہ تیسری لہر او ر تحفظ اطفال کی تیاریاں

تمام جاری کام مکمل کرنے اور عملہ کے بہتر استعمال کی ہدایت

جموں// ڈاکٹر ششی سدھن شرما ، پرنسپل جی ایم سی جموں کی صدارت میں پیڈیاٹرک کو وڈ 19 ٹاسک فورس کا اجلاس آج کووڈ 19 وبائی امراض کی تیسری لہر کی تیاری کا جائزہ لینے کے لئے منعقد ہوا۔سنجیو ڈیگرا ، پروفیسر ڈیپارٹمنٹ پیڈیاٹریکس کے کمیٹی کے ذریعہ' بچوں اور نوعمروں کے لئے کوویڈ کیئر سروسز کا آپریشن 'کے طور پر رہنما خطوط اور تقاضے پیش کیے گئے۔کمیٹی ممبران نے سفارشات پر تبادلہ خیال کیا اور انجینئرز نے ایس ایم جی ایس ، ایم سی ایچ ، جی ایم سی ایچ ، ایس ایس ایچ اور ڈی آر ڈی او ہاسپٹل میں جاری کاموں کی حیثیت پیش کی۔پرنسپل جی ایم سی نے جی ایم سی اور ھ میں انسانی وسائل کی تربیت کے بارے میں تفصیلات شیئر کیں۔ انہوں نے کہا کہ تربیت متعدد سطح پر جاری ہے اور یہ منصوبہ ہے کہ جی ایم سی اور اے ایچ میں کام کرنے والی تمام نرسوں اور پیرامیڈیکل عملہ کو CoVID 19 وبائی بیماری کے تیسرے مرحلے کا سامنا کرنا ہو گا۔ میڈیکل سپرنٹنڈنٹس کو ہدایت کی گئی کہ وہ بروقت تکمیل کے لئے جاری کاموں کی ضروریات کے مطابق نگرانی کریں۔ مزید ، انھیں ایسوسی ایٹ ہسپتالوں میں کام کرنے والے عملے کے استعمال کو بہتر بنانے کی ہدایت کی گئی۔منصوبہ بندی کرنے والے افراد کو ہدایت کی گئی کہ وہ انتظامی محکموں کے ساتھ صلاحیت بڑھانے کی تجاویز پر عمل کریں۔ انجینئرز نے آکسیجن جنریشن پلانٹس ، 2 مزید ایل ایم اوز کے لئے ڈی پی آر اور جی ایم سی ایچ کے نئے ایمرجنسی بلاک پر قبضہ کرنے کی تیاری سمیت کاموں کی حیثیت پیش کی۔پرنسپل نے عملدرآمد کرنے والی ایجنسیوں کو ہدایت کی کہ وہ کام مقررہ وقت پر مکمل کریں۔ مشینری ، سازوسامان اور دیگر اشیاء کی ضرورت جے کے ایم ایس سی ایل کو ارسال کردی گئی ہے اور اس کی بھرپور تلاش کی جارہی ہے۔
 

کووڈ ایس او پیز کی خلاف ورزی پر1.36 لاکھ روپے کا جرمانہ

رام بن میں2944 ٹیکے لگائے گئے ، 1240 نمونے جمع

رام بن//ضلع رام بن میں کوویڈ پروٹوکول کے نفاذ کے لئے مہم کو جاری رکھتے ہوئے انفورسمنٹ ٹیموں نے چہرے کے ماسک پہنائے بغیر گھومنے اور جسمانی فاصلہ برقرار نہ رکھنے پر متعدد خلاف ورزی کرنے والوں کو جرمانہ کیا۔انفورسمنٹ ٹیموں نے اپنے اپنے دائرہ اختیار میں معائنے کے دوران کل رقم 1 لاکھ 36 ہزار روپے وصول کی اور یوں 1 اپریل 2021 سے کل 26لاکھ 96ہزار200روپے جرمانہ کے مد میں وصول ہوئے ہیں۔انفورسمنٹ افسران نے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ چہرے کے ماسک پہنیں اور جسمانی فاصلہ برقرار رکھیں اس کے علاوہ وہ اپنے قریبی سی وی سی میں کوویڈ ویکسی نیشن کی خوراکیں لیں۔ڈسٹرکٹ امیونائزیشن آفیسر رام بن ڈاکٹر سریش نے بتایا کہ بدھ کے روز ضلع رام بن میں 2944 افراد کو پہلی اور دوسری کوویڈ ویکسین کی خوراکیں فراہم کی گئیں۔چیف میڈیکل آفیسر رام بن ڈاکٹر محمد فرید بھٹ کے روزانہ جاری کردہ بلیٹن کے مطابق ، محکمہ صحت نے 1240 نمونے اکٹھے کیے ہیں جن میں 349 آر ٹی-پی سی آر اور 891 آر اے ٹی نمونے شامل ہیںجبکہ ضلع کے ویکسی نیشن مراکز میں 2944 افراد کو کوڈ ویکسین د ئے گئے۔
 
 
 

ڈوڈہ میں بلاک وار کووڈ ٹیکہ کاری کی صورتحال کا جائزہ  

ڈوڈہ//ڈپٹی کمشنر ڈوڈہ وکاس شرما نے محکمہ صحت کے اہم عہدیداروں کے اجلاس کی صدارت کی اور ضلع میں ٹیکہ کاری کی صورتحال کا جائزہ لیا۔کم فیصد آبادی والے علاقوں میں 45 سال اور اس سے اوپر کی عمر کے گروپوں کی ٹیکہ کاری کے اقدامات پر بھی زیر بحث آئے ، اس کے علاوہ 45 سال اور اس سے زیادہ عمر کے گروپ کے سرکاری ملازمین اور سرکاری ملازمین کی ٹیکہ کاری کی حیثیت کے بارے میں بھی پوچھ گچھ کی گئی۔ڈی سی نے متعلقہ افراد کو ہدایت کی کہ وہ تمام رہ چکی انٹریز کو مقررہ پورٹل پر اپلوڈ کریں اور ضلع کے دیگر علاقوں کے مقابلہ میں کم فیصد رکھنے والے علاقوں کو نشانہ بنانے والی ٹیموں کو متحرک کریں۔مزید ڈی سی نے نوڈل افسران کو ہدایت کی کہ وہ سرکاری محکموں کے عمر مناسب ملازمین کی ویکسی نیشن کی تفصیلات پیش کریں۔ڈی سی نے متعلقہ افراد کو ہدایت کی کہ وہ ویکسی نیشن کی فی صد کو تیز کرنے کے لئے اپنے تمام وسائل کو متحرک کریں جو اس وقت تقریباً 75 فیصد ہے۔
 

کٹھوعہ میں کووڈسے صحتیابی کی شرح 98 فیصدسے زیادہ

 45+ عمر کی زمرے میں 81فیصد نے ٹیکہ لگایا،ہیر انگر بلاک میں صد فیصد ہدف حاصل: ڈی سی کٹھوعہ
 کٹھو عہ// ڈپٹی کمشنر راہول یادو نے کہا کہ کٹھوعہ میں کووڈ صحتیابی کی شرح 98فیصد کو چھو گئی ہے اور ضلع میں گذشتہ چند ہفتوں میں مجموعی طور پر کوویڈ منظر نامے میں مزید بہتری آئی ہے۔انہوں نے یہ بات ڈی سی آفس کمپلیکس میں منعقدہ ہفتہ وار پریس بریفنگ کے دوران میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی۔انہوں نے کہا کہ کوویڈ مثبت کیسوں کے مسلسل گرتے ہوئے رجحان نے ضلع میں ویکسی نیشن کی کوششوں کو تیز کرنے کے لئے ایک بہتر تیاری کا موقع فراہم کیا ہے۔ "صحت کی ٹیمیں جو اسٹیک ہولڈرز کی فعال شرکت سے دور دراز علاقوں تک پہنچ رہی ہیں تاکہ ضلع کے مناسب عمر میں حفاظتی ٹیکوں کے اہل افراد کو پورا کیا جاسکے۔ انہوں نے کہاکہ 45 سال اور اس سے اوپر کی عمر کے گروپوں میں اب تک 81 فیصد آبادی کو ویکسین دی جاچکی ہے جبکہ پچھلے کچھ دنوں میں 18 سے 4 سال کے زمرے کے لئے ٹیکہ لگانے کی مہم کو مزید تیز کردیا گیا ہے۔ویکسی نیشن کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہوئے اور اسے کوویڈ۔19 کے خلاف جنگ میں ایک مضبوط آلہ قرار دیتے ہوئے ، ڈی سی نے لوگوں سے خاص طور پر 18+ سے اپیل کی کہ وہ ویکسین کی مقدار لینے کے لئے قریبی ویکسی نیشن سنٹر کا دورہ کریں۔ڈی سی نے بتایا کہ ہیرا نگر میڈیکل بلاک نے 45 سال اور اس سے زیادہ عمر کے گروپوں کو 100فیصد ٹیکہ لگا کر کامیابی حاصل کی ہے۔راہول یادو نے کہا کہ پنچایتی نمائندوں اور سول سوسائٹی کے ممبروں نے پنچایتوں میں خاص طور پر کم اسکور بنی اور بلاور میڈیکل بلاک میں 100 فیصد ویکسی نیشن حاصل کرنے میں اہم رول ادا کیا۔
 

کورونا مثبت معاملات میں مسلسل اضافہ

پوچھال علاقہ ما ئیکرو کنٹینمنٹ زون قرار

عاصف بٹ
کشتواڑ//ضلع کشتواڑ  میں ماہ جون کے دوران جہاں کورونا وائرس کے مثبت معاملات میں کمی درج کی گئی جس دوران متعدد مائیکرو کنٹینمنٹ زونز کو ڈی نوٹیفائی کیا گیا وہیں اس ماہ محض ایک علاقہ کو مائیکرو کنٹینمنٹ زون قرار دیا گیا۔ اس وقت ضلع میں مثبت معاملات کی تعداد150 سے بھی کم ہے ۔ضلع ترقیاتی کمشنر کی جانب سے جاری کئے گئے حکمنامے کے مطابق قصبہ کشتواڑ کے قریب واقع علاقہ پوچھال کومائیکرو کنٹینمنٹ زون قراد دیا گیا۔اختر حسین کے مکان سے دیبا رام کے مکان تک 200کے قریب آبادی والے علاقہ جبکہ سکندر کچلو کے مکان سے اظہر گیری کی دوکان تک210 کے قریب آبادی والے علاقے، بیر سنگھ کے مکان سے غلام حسن بٹ کے مکان تک 110 آبادی والے علاقے جبکہ اظہر گیری کی دوکان سے سنتوش کمار کے مکان تک 80 کے قریب آبادی والے علاقے کو مائیکرو کنٹینمنٹ زون قراد دیا گیاہے جبکہ نایب تحصیلدار کو انچارج تعینات کیا گیا۔ ایس ایچ او کشتواڑ کو صد فیصد ٹیسٹنگ و ٹیکہ کاری کرنے کی ہدائت جاری کی گئی ہے ۔