کورونا کی دوسری لہر میں اُچھال

۔  15فروری سے 18مارچ تک 2576 وائرس میں مبتلا،714سفر کرکے لوٹے

 
 سرینگر // وادی میں کورونا کی دوسری لہر میں اضافہ پچھلے سال جون کے مہینے میںوائرس متاثرین کی تعداد کے برابر چل رہی ہے۔15فروری کے بعد وادی میں کورونا متاثرین کی تعداد میں بتدریج اضا فہ ہوا اور مارچ کے دوسرے ہفتے سے اس میں اچھال دیکھنے کو مل رہا ہے۔جمعرات کو140افراد مثبت قرار دیئے گئے جبکہ ایک شخص کی موت واقع ہوئی ۔ پچھلے سال 12جون کو 129لوگ مثبت آئے تھے اور 13جون 2020 کو کورونا وائرس سے 148افراد پائے گئے تھے۔پچھلے 2دنوں سے جموں و کشمیر میں وائرس متاثرین کی تعداد میں زبردست اچھال دیکھنے کو مل رہا ہے اور صورتحال سال 2020کی جانب بڑھ رہی ہے۔ 24گھنٹوں کے دوران کورونا وائرس کی تشخیص کیلئے28461ٹیسٹ کئے گئے جن میں 140افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں جن میں 36سفر کرنے والے بھی شامل ہیں۔اس دوران کشمیر میں ایک اور متاثرہ شخص فوت ہوگیا اور متوفین کی مجموعی تعداد1978تک پہنچ گئی۔نئے 140معاملات میں 25جموں جبکہ 115کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں۔ کشمیر سے تعلق رکھنے والے 115متاثرین میں 82مقامی سطح جبکہ 33مختلف ریاستوں اور ممالک سے وادی واپس لوٹے ہیں۔ 15فروری سے18 مارچ تک2576فراد کی رپورٹیں مثبت آئیں جن میں سے2152کشمیر سے تعلق رکھتے ہیں ۔ کشمیر سے تعلق رکھنے والے2152افراد میں سے1497مقامی سطح پر جبکہ 714بیرون ریاستوں اور ممالک سے لوٹے ہیں۔کشمیر میں متاثرین کی مجموعی تعداد75805ہوگئی ہے جبکہ صوبے میں وائرس سے ابتک 1246  فوت ہوگئے ہیں۔ جموں صوبے میں جمعرات کو 25افراد کی رپورٹیں مثبت آئیں جن میں سے 22مقامی سطح  جبکہ 3افراد بیرون ریاستوں سے سفر کرنے کے بعد واپس لوٹے ہیں۔ جموں صوبے میں متاثرین کی مجموعی تعداد 52292ہوگئی ہے جبکہ جموں و کشمیر میں مجموعی طور پر متاثرین کی تعداد 1لاکھ 28ہزار کا ہندسہ پار کرکے 128097ہوگئی ہے۔