کورونا کی دوسری لہر :ملک بھر میں 850ڈاکٹر فوت

سرینگر //انڈین میڈیکل ایسوسی ایشن نے بدھ کو جموں و کشمیر میںکورونا کے پھلائو کو روکنے میںبہترین کارگردگی دیکھانے والے 5ڈاکٹروں کو انعامات اور اسناد سے نوازا ہے ۔(آئی ایم اے) نے یکم جولائی کو مالجین کے عالمی دن کے موقع پرجموں و کشمیر سے تعلق رکھنے والے 5ڈاکٹروں کو انعامات و اسناد سے نوا زنے کا علان کیا تھا جن میں ڈائریکٹر سکمز صورہ ڈاکٹر اے جی آہنگر، پرنسپل جی ایم سی سرینگر ڈاکٹر سامیہ رشید ،مڈیکل سپر انڈنٹنڈنٹ جے وی سی سرینگر ڈاکٹر شفا دیوا، جی ایم سی سرینگر میں شعبہ کمونٹی مڈیسن کے سربراہ ڈاکٹر محمد سلیم خان اور جی ایم سی جموں میں شعبہ مڈیسن کے سربراہ ڈاکٹر وجے کنڈل کے نام شامل ہیں۔ جی ایم سی سرینگر میں منعقد کی گئی تقریب کے دوران پرنسپل گورنمنٹ میڈیکل کالج سرینگر ڈاکٹر سامیہ رشید نے کہا ’’کورونا وائرس سے پوری دنیا میں لوگ مشکلات اور مصائب میں مبتلا ہوئے ہیں اور عالمی وباء سے لوگوں کی جان بچانے کیلئے ڈاکٹروں نے انتھک محنت کی اور دوران ڈیوٹی عام لوگوں کی طرح ڈاکٹروں نے بھی مشکلات اور مصائب کا سامنا کیا اور اس دوران ڈاکٹروں کو اپنی جان سے بھی ہاتھ گنوانا پڑا ہے‘‘۔ انہوں نے ملک میں کورونا وائرس کے خلاف جنگ لڑنے والے ڈاکٹروں کو بھی خراج تحسین پیش کیا ۔آئی ایم اے کے صدر ڈاکٹر جے اے جیالال نے کہا کہ آئی ایم اے سب کو ساتھ لیکر چلنے کی پالیسی پر یقین رکھتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کشمیر میں آئی ایم اے ہائوس کی تعمیر کیلئے انڈین میڈیکل ایسوسی ایشن کا مرکزی دفتر 10لاکھ روپے بطور مالی امداد فراہم کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ انڈین میڈیکل ایسوسی ایشن پورے ملک میں فیلو شپ پروگرام کا انعقاد کرتی ہے اور کشمیر میں بھی فلو شپ پروگراموں کا انعقاد کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ ایسوسی ایشن ڈاکٹروں کے حقوق کیلئے لڑتی ہے اور وہ ڈاکٹروں کے ساتھ غیر مہذب سلوک کے خلاف ہے۔اس موقع پر آئی ایم اے کے جنرل سیکریٹری ڈاکٹر جیش لیلے نے بھی خطاب کیا اور ملک میں کورونا وائرس کے خلاف لڑائی میں جان گنوانے والے ڈاکٹروں کو خراج عقیدت پیش کیا ۔ 
ڈاکٹر جیش نے کہا کہ کورونا وائرس کی دوسری لہر ڈاکٹروں کیلئے بھی مہلک ثاب ہوئی ہے کیونکہ دوسری لہر میں ملک بھر میں 850ڈاکٹروں نے اپنی جان گنوائی ہے۔تقریب کے اختتام پر نامز ڈاکٹروں میں انعامات اور اسناد تقسیم کئے گئے جبکہ تقریب میں منتظم کی ذمہ داری ڈاکٹر سلیم خان نے انجام دی۔