کورونا کرفیو کا چھٹا دن

سرینگر+جموں// کورونا کرفیو کے چھٹے روز بھی جموں کشمیر میں  بیشتر اضلاع میں بندشوں اور قدغنوں سے عام زندگی کی رفتار تھم گئی۔ اگر چہ انتظامیہ نے صرف 5اضلاع میں کرفیو کے نفاذ کا اعلان کیا تھا لیکن دیگر اضلاع میں بھی کورونا لاک ڈائون جاری ہے۔ منگل کوسرینگر ، بارہمولہ، بڈگام، سانبہ اور جموں اضلاع میں سرکاری طور پر لاک ڈائون کو جاری رکھنے کا فیصلہ کیا گیا تھا، لیکن دیگر اضلاع میں بھی مکمل بندشیں رہیں۔بدھ کی شام کپوارہ اور شوپیان میں باضابطہ پر پبلک ایڈرس سسٹم سے اعلان کروایا گیا کہ کورونا کرفیوغیر معینہ مدت تک جاری رہیگا۔پلوامہ ، کولگام اور اننت ناگ کے علاوہ گاندربل اور بانڈی پورہ میں پہلے ہی بندشیں عائد کی گئیں تھیں۔اسی طرح کی صورتحال جموں میں بھی رہی ۔ جموں، سانبہ اور کھٹوعہ میں مکمل بندشیں رہیں جبکہ ادہمپور، ڈوڈہ ، راجوری اور پونچھ میں بھی لاک ڈائون رہا۔اسکے علاوہ جموں کشمیر کے دیگر قصبوں اور بڑے شہروں میں کرفیو کا نفاذ عمل میں لایا گیا۔جموں کشمیر کے سبھی شہروں کو سیل کیا گیا ہے تاہم نجی ٹرانسپورٹ کو چلنے کی اجازت دی جارہی ہے۔ سرینگر اور جموں شہر میں نجی گاڑیوں کی بھر مار دکھائی دے رہی ہے اور یہ سلسلہ دن بھر جاری ہے۔اگر چہ جگہ جگہ ولیس کے ناکے رکھے گئے ہیں لیکن نجی ٹرانسپورٹ پر اسکا کوئی اثر دکھائی نہیں دے رہا ہے حتیٰ کہ کچھ روٹوں پر اکا دکا سومو  گاڑیاں بھی چلتی نظر آنے لگی ہیں جبکہ آٹو رکھشا بھی چلنے لگے ہیں۔جموں کشمیر کے ہر شہر اور قصبے میں ہر طرح کے کاروباری و تجارتی مراکز بند ہیں اور مسافر گاڑیاں سڑکوں سے غائب ہیں۔ تمام تجارتی مراکز کے ساتھ ساتھ رستوران ، ہوٹل اورگیسٹ ہاو س بھی تالہ بند ہیں ۔ اس دوران پولیس نے ضوابط کی خلاف ورزی کرنے پر129افراد کی گرفتاری عمل میں لائی اور ایک درجن دکانوں کو بھی سیل کیا ۔پولیس نے بتایا کہ گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ، کشمیر بھر میں کورونارہنما خطوط و ضوابط کی خلاف ورزی کرنے پر 586 افرادسے خلاف ورزی کی پاداش میں91ہزار650روپے بطور جرمانہ وصول کیا گیا،جبکہ47ایف آئی آر درج کرکے 129 افراد کو گرفتار کیا گیا۔ بڈگام میں ہدایات کی خلاف ورزی ، پابندیوں اور غیر قانونی کھدائی اور مٹی کی نقل و حمل میں ملوث ہونے پر 23 گاڑیاں بھی پکڑی گئیں۔ پولیس نے بڈگام کے بیروہ اور خانصاحب علاقوں میں کوویڈ اصولوں کی خلاف ورزی کرنے پر ایگزیکٹو مجسٹریٹ کے ساتھ 11 دکانیں بھی ضبط کیں۔