کورونا لاک ڈائون |طلاب سے فیس وصولی میں بے ضابطگیاں

  سرینگر//جموں و کشمیر حکومت نے کوویڈ لاک ڈاؤن مدت کے دوران طلباء سے فیس وصول کرنے کے حکومتی احکامات کی تعمیل نہ کرنے پر سری نگر کے چار اسکولوں سے وابستہ سنٹرل اسکول آف ایجوکیشن کے خلاف کارروائی کا آغاز کیا ہے۔یہ قدم جموں کشمیر بورڈ آف اسکول ایجوکیشن نے فیسوں کی وصولی کے لئے جاری سرکاری حکم کی خلاف ورزی پر سات اسکولوں کے لئے اپنی تمام سہولیات معطل کرنے کے چند دن بعد کیا ہے۔پرنسپل سکریٹری اسکول ایجوکیشن کو روانہ کئے گئے  ایک سرکاری مکتوب میں ، ڈائریکٹر اسکول ایجوکیشن کشمیر نے سری نگر کے چار سی بی ایس ای سے وابستہ اسکولوں کی این او سی کو معطل کرنے کا مطالبہ کیا۔جیسا کہ پہلے ہی اطلاع دی گئی ہے ،  جموں کشمیر بورڈ آف اسکول ایجوکیشن نے سات اسکولوں کی اپنی سہولیات معطل کرتے ہوئے محکمہ تعلیم کو آگاہ کیا کہ دوسرے اسکولوں کے نام  بورڈ سے وابستہ نہیں ہیں۔سرکاری مکتوب میں کہا گیا’’ جموں کشمیر بورڈ آف اسکول ایجوکیشن نے سرکاری احکامات پر عمل درآمد کے سلسلے میں متعلقہ اسکولوں سے  ڈائریکٹوریٹ آف اسکول ایجوکیشن کی طرف سے این ائو سی کی فراہمی تک اسکولوں کے حق میں تمام سہولیات معطل کردیئے ہیں۔"تاہم ، یہ چار اسکول  سی بی ایس ای  کے ساتھ منسلک ہے اور اور بورڈ حکام نے یہ معاملہ سی ابی ایس سی حکام سے  کارروائی کرنے کی درخواست کی ہے۔درخواست میں کہا گیا’’مذکورہ بالا کے پیش نظر ، درخواست کی جاتی ہے کہ ان اسکولوں کے حق میں جاری کردہ این او سی کو اس وقت تک معطل کردیا جائے جب تک وہ سرکاری احکامات ، دیگر سرکلر ہدایات پر عمل درآمد کو یقینی نہ بنائیں۔ ڈائریکٹوریٹ نے مزید استدعا کی ہے کہ سی بی ایس ای کے حکام سے معاملہ اٹھایا جاسکتا ہے جب کہ اس ڈائریکٹوریٹ کی طرف سے این او سی جاری نہ ہونے تک ان اسکولوں کے امورات کو برقرار نہ رکھیں۔