کنسولی مہورمیں پی ڈی پی کا اجلاس

 مہور// مہور کنسولی کے مقام پر پی ڈی پی کے ضلع ریاسی کے صدر شفیق الرحمن بٹ کی صدارت میں ایک عوامی اجلاس کا انعقاد کیا گیا جس میں کنسولی کے کئی مقامی نوجوانوں اور شخصیات نے کانگریس اور این سی کو خیرباد کہہ کر پی ڈی پی میں شمولیت اختیار کی۔ نوجوانوں نے کہا کہ ایڈوکیٹ شفیق الرحمن بٹ ایک تعلیم یافتہ لیڈر ہیں اور نوجوانوں کے مسائل سے بخوبی واقف ہیں۔ انہوں نے عبدالغنی ملک اور حاجی ممتاز خان پر الزام عائد کیا کہ وہ مہور کی مرکزیت کو ختم کرنے پر تلے ہوئے ہیں اوروہ ایسا ہرگز نہیں ہونے دیں گے ۔ اجلاس سے پی ڈی پی کے کئی اہم کارکنان نے بھی خطاب کیا جن میں زونل یوتھ صدر محمد رفیع شاہ ،حاجی ماسٹر سبحان الدین ملک، محمد یاسین شیخ،مولوی عبدالغفور سنگلی کوٹ، مولوی غلام علی اور چوہدری شوکت حسین شامل ہیں ۔ان کارکنان نے حلقہ گلابگڑھ میں سیاسی تبدیلی لانے کیلئے یکجہتی پر زور دیا۔ اس موقعہ پر محمد یاسین شیخ نے اپنے خطاب میں کہا کہ بلاک چسانہ کا ہر سنجیدہ شخص اور خاص کر نوجوان ایک نیا سیاسی انقلاب لانے کیلئے کوشاں ہے اور شفیق الرحمن بٹ کے ساتھ ہیں۔ حاجی ماسٹر سبحان دین ملک نے کہا کہ بلاک گلابگڑھ کے تمام ووٹ شفیق الرحمن بٹ کی طرف  ہیں۔ چوہدری شوکت حسین نے کہا کہ کلواہ کی گوجر برادری بٹ کے ساتھ ہے اور سیاسی انقلاب لانے کے لئے کمربستہ ہے۔ اسی طرح سے مولوی عبدالغفور نے بھی حمایت کا اعلان کیا۔ اس موقعہ پر سینئر سماجی کارکن اور گلابگڑھ کی تعلیمی شخصیت ماسٹر محمد اسرائیل نے بھی اجلاس سے خطاب کیا۔ انہوں نے اپنی تقریر میں کہا کہ مہور کے نام پر دفاتر کی ہورہی بندر بانٹ کو روکنے اور اس کی مرکزیت کو بحال کرنے کے لئے انہوں نے اس بار فیصلہ کیا ہے کہ وہ شفیق الرحمن بٹ کا ساتھ دیں گے۔انہوں نے کہا کہ آزادی کے 73 سال گزرجانے کے بعد بھی آج حلقہ گلابگڑھ کے متعدد علاقے کئی بنیادی سہولیات سے محروم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ خاص کر طولی بنہ تا نرلو علاقہ کے کئی گاؤں آج بھی سڑک کے رابطہ، بجلی،پانی اور صحت عامہ کی سہولیات سے محروم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ طولی بنہ تا نرلو کی عوام بھی ایسی سیاسی تبدیلی کے حق میں ہے جو لیڈروں سے نجات دلا سکے کیونکہ ان دونوں لیڈروں نے اس پورے بیلٹ کے ساتھ سوتیلی ماں کے جیسا سلوک کیا ہے۔ انہوں نے عوام پر زور دیا کہ آنے والے اسمبلی انتخابات میں وہ ذات پات' گوجر کشمیری یا ہندو مسلم کی فرقہ پرست سوچ سے اوپر اوٹھ کر حلقہ کی ترقی اور خوشحالی کے لئے ایک نیا سیاسی انقلاب لائیں۔ اپنے خطاب میں شفیق الرحمان بٹ نے کہاکہ اگر وہ اقتدار میں آئے تو مہور کی مرکزیت بحال کرنے اور حلقہ کی مجموعی ترقی و خوشحالی کے لئے کوئی سمجھوتہ نہیں کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ وہ خود نوجوان ہیں اور نوجوانوں کے مسائل سے بخوبی واقف ہیں۔ انہوں نے کہا کہ میں ایک ایسے گلابگڑھ کا خواب دیکھ رہا ہوں جو ذات پات،مذہب و ملت،رنگ و نسل سے دور ایک نیا ترقی یافتہ گلابگڑھ ہو اور جس کا مرکز مہور ہو۔انہوں نے فرقہ پرست اور موقع پرست طاقتوں سے ہرحال خبر دار رہنے کی اپیل کی۔اجلاس میںچوہدری ولی محمد نائب سرپنچ، حاجی چوہدری غلام حسین، ڈیلر چوہدری ذاکر حسین، چاندی بخش، چوہدری محمد اشرف سانگو، مشتاق احمد سانگو،نظیر احمد سانگو، محمد ایوب سانگو،چوہدری مشردین، مراد علی،عاشق علی سانگو، چوہدری بشیر احمد سانگو، چوہدری حاکم دین سانگو،محمد ایوب،جان محمد، منیر حسین سانگو، محمد لطیف سانگو،محمد شفیع گورسی،میر حسین سانگو،چوہدری بشیر احمد کھوڑی والا، حاجی سراج دین،غلام حسین،چوہدری نظام دین،مشتاق احمد، عاشق علی،محمد شریف، لیاقت علی سانگو،محمد رفی، شمیم احمد سیلہ،منظور احمد سیلہ،محمد ایوب، محمد حسین سیلہ،پیر باغ حسین،محمد اشرف بجران،محمد مشتاق،محمد قاسم،محمد شفیع کھٹانہ،محمد جاوید،بشیر احمد تیلوی،غلام حسین کھوڑی والا،محمد شبیر کھوڑی والا،مشتاق احمد پھڑی وغیرہ بھی موجو دتھے ۔