کند منجہاڑی واٹر سپلائی سکیم 15برسوں سے تشنہ تکمیل

مینڈھر //مینڈھر سب ڈویژن کے نکہ منجہاڑی علاقہ میں زیر تعمیر کند منجہاڑی واٹر سپلائی سکیم گزشتہ 15برسوں سے مکمل نہ ہو سکی جس کی وجہ سے علاقہ کی ایک بڑی آبادی پینے کے صاف پانی کی عدم دستیابی سے مجبور ہو گئی ہے ۔مقامی لوگوں نے بتایا کہ واٹر سپلائی سکیم 2005میں شروع کی گئی تھی جبکہ متعلقہ محکمہ نے کچھ علاقہ میں پاپئیں بچھائی تاہم اس عمل کو نا معلوم وجوہات کی بنیاد پر یوں ہی چھوڑ دیا گیا ۔مقامی سرپنچ اقبال خان اور سماجی کارکن راجہ وسیم خان نے بتایا کہ واٹر سپلائی سکیموں کو مکمل کروانے کے سلسلہ میں انہوں نے انتظامیہ کے لگ بھگ ہر ایک اجلاس میں شرکت کی جہاں پر آفیسران نے کچھ ہی دنوں میںسکیم کو مکمل کروانے کی یقین دہانی کروائی تاہم 15برس بعد بھی واٹر سپلائی سکیم جوں کی توں ہی ہے ۔انہوں نے متعلقہ محکمہ کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ دریا پار کرنے کے دوران پائپوں کو سپور ٹ دینے کے بجائے دریا میں بچھائی گئی ہیں جس کی وجہ سے گزشتہ برس پاپئیں بھی بہہ گئی ۔انہوں نے بتایا کہ کچھ حد تک جنرل لائن ہی بچھائی جاسکی ہے جبکہ گائوں میں کوئی بھی سپلائی لائن نہیں بچھائی جاسکی جس کی وجہ سے عام لوگوں کو کئی کلو میٹر کی پید مسافت طے کر کے پینے کا صاف پانے لانا پڑرہا ہے ۔مکینوں نے بتایا کہ متعلقہ محکمہ نے سکیم کا 250کے وی ٹرانسفارمر نصب کرنے کے بجائے زمین اور پتھروں پر ہی رکھ دیا ہے جو کہ مکینوں کیلئے ایک خطرہ بن گیا ہے ۔انہوں نے ضلع ترقیاتی کمشنر پونچھ سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ 3کروڑ 70لاکھ روپے کی واٹر سپلائی سکیم پر خرچ ہوئی رقم کا معائینہ کیا جائے جبکہ محکمہ کو ہدایت جاری کی جائیں تاکہ ان کو پینے کا صاف پانی مل سکے ۔