کمیونٹی ہیلتھ سنٹر کنڈی میں بنیادی سہولیات کا فقدان ۔3ماہ سے گلوکوز اور ڈرسنگ دستیاب نہیں ،مریض نجی دکانوں پر در بدر

 محمد بشارت

کوٹرنکہ //کوٹرنکہ سب ڈویژن میں قائم کردہ کمیونٹی ہیلتھ سنٹر میں مریضوں کیلئے سہولیات دستیاب نہ ہونے کی وجہ سے مریض مشکل وقت میں بھی میڈیکل سٹوروں پر جانے پر مجبور ہو گئے ہیں ۔مریضوں کیساتھ ساتھ عام لوگوں نے شعبہ صحت کے منتظمین کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ خطہ کے ایک اہم ہسپتال میں گزشتہ3ماہ سے گلوکوز اور ڈرسنگ کیساتھ ساتھ دیگر ساز وسامان ختم ہوا ہے لیکن اس کے بعد مذکورہ سازوسامان فراہم کرنے کیلئے ابھی تک کوئی عملی قدم نہیں اٹھایا گیا ہے جس کی وجہ سے مریضوں کی مشکلات مزید بڑھتی جارہی ہیں ۔مقامی لوگوں نے شعبہ کے اعلیٰ آفیسران کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ ہسپتال میں مریضوں کو حالات کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا گیا ہے جس کی وجہ سے وہ نجی دکانوں و کلینکوں پر در بدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہو گئے ہیں ۔علاقہ مکینوں نے شعبہ صحت کے اعلیٰ آفیسران کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ حکومت کی جانب سے مذکورہ شعبہ کی بہتری کیلئے بڑے بڑے دعوئے کئے جارہے ہیں لیکن پسماندہ علاقوں میں قائم کردہ اداروں میں صورتحال مزید خستہ ہو چکی ہے ۔ایک اہلکار نے اپنا نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر بتایا کہ محکمہ کے مذکورہ ادارے کے پاس گلوکوز و دیگر سہولیات دستیاب نہیں ہیں جس کی وجہ سے مریضوں کیساتھ ساتھ ہسپتال انتظامیہ بھی پریشانی میں مبتلا ہو گئی ہے ۔مقامی لوگوں و مریضوں نے شعبہ صحت کے ساتھ ساتھ جموں وکشمیر کی اعلیٰ انتظامیہ سے اپیل کرتے ہوئے کہاکہ سی ایچ سی کنڈی میں بنیادی سہولیات فراہم کی جائیں ۔