کل ہند میڈیکل نشستوں کا کوٹہ سسٹم

سرینگر// میڈیکل کالجوں میں زیر تعلیم طلاب نے کل ہند کوٹہ سسٹم کے تحت پی جی نشستوں کی تقسیم کا مکمل خاتمہ کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے سرینگر میں احتجاج کیا۔ پریس کالونی میں منگل کو  وادی کے میڈیکل کالجوں میں زیر تعلیم طلاب نے احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ جموں و کشمیر کے میڈیکل طلباء وزارت خاندانی بہبود و صحت کے مسودے کے خلاف تحفظات رکھتے ہیں.۔ان کا کہنا تھا کہ جموں کشمیر میں کل ہند کوٹا کا اطلاق نہیں کیا جانا چاہیے کیونکہ اس سے میڈیکل طلاب کو براہ راست پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑے گا اور وہ اس سے متاثر ہونگے۔ ان کا کہنا تھا کہ رہنما خطوط کے تحت گورنمنٹ میڈیکل کالج کے50 فیصد اور سکمز کی100فیصد نشستوں کو کل ہند کوٹہ نظام کے تحت تقسیم کیا جائے گا،جس کے نتیجے میں350سے500نشستوں کا نقصان ہوگا،کیونکہ صرف172نشستوں کو ہی مقامی طلاب کیلئے مخصوص رکھا گیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ2ہزار مقامی طلاب کیلئے500نشستوں کے برعکس ڈیڑھ لاکھ طلاب کیلئے5ہزار نشستوں کے تناسب سے ان کے مستقبل پر براہ راست اثرات مرتب ہونگے۔طلاب کا کہنا تھا کہ صورہ میڈیکل انسٹی چیوٹ میں بھی مقامی طلاب کیلئے کوئی بھی نشست مخصوص نہیں رہے گی۔انہوں نے لیفٹیننٹ گورنر سے مطالبہ کیا کہ جموں کشمیر میں اس فیصلے کا اطلاق نہیں کیا جانا چاہیے۔احتجاجی میڈیکل طلاب نے ہاتھوں میں پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے جن پر انہیں انصاف دینے کا مطالبہ کیا گیا تھا۔