کلبھوشن یادیو کی حوالگی کا کوئی امکان نہیں

 اسلام آباد//پاکستانی مشیر خارجہ سرتاج عزیز کا کہنا ہے کہ گرفتار بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو کے خلاف ایف آئی آر درج کر لی گئی ہے اور اب اس کے خلاف مقدمہ بھی چلے گا۔سینیٹ اجلاس میں سرتاج عزیز نے کہا کہ میں نے ناکافی شواہد کی بات نہی کی تھی، کلبھوشن یادیو کے خلاف ایف آئی آر درج کر لی گئی ہے اور اب بھارتی جاسوس کے خلاف مقدمہ چلے گا۔ سرتاج عزیز نے کہا کہ 31 دسمبر تک یو این او کو ڈوزیئر ارسال کیا تھا، ڈوزیئر ارسال کرنے کا مقصد دنیا کو بتانا تھا کہ بھارت پاکستان میں مداخلت کرتا ہے۔وزارت خارجہ کی جانب سے سینٹ میں جمع کرائے گئے تحریری جواب میں کہا گیا کہ حکومت نے پاکستان کے داخلی معاملات میں بھارتی مداخلت کے واقعات میں ملوث ہونے سے متعلق اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل کو آگاہ کر دیا ہے، حکومت پاکستان نے کلبھوشن یادیو اور اس کی سرگرمیوں سے متعلق بھی اقوام متحدہ کو باضابطہ آگاہ کر دیا ہے، دیگر ممالک اور بین الاقوامی اداروں کو بھی اس سے متعلق آگاہ کرنے پر غور کر رہے ہیں۔ کلبھوشن یادیو کے خلاف معلومات تفصیلی زمینی حقائق اور مختلف اداروں کی مشاورت سے تیار کی گئیں ہیں، متعلقہ معاملہ انتہائی حساس ہے اس لیے اس تفصیل تیار کرنا ہو گی۔مشیر خارجہ کا کہنا تھا کہ کلبھوشن یادیو کو بھارت کے حوالے کرنے کا کوئی امکان نہیں اور نہ ہی کوئی ایسی تجویز زیرغور ہے۔ان کا کہنا تھا کہ کلبھوشن یادیو کے حوالے سے پاکستان نے سوالات کی فہرست بھیجی ہے اور بھارت سے ان کے تفصیلی جوابات طلب کیے ہیں۔مشیرخارجہ کے مطابق کلبھوشن یادیو کے خلاف ڈوزیئر اصل مسئلہ نہیں، پراسیکیوشن اصل کام ہے جس پر کام جاری ہے۔