کشمیر یونیورسٹی کے 100افسروں کی نئے رجسٹرار سے ملاقات

سرینگر//کشمیریونیورسٹی کے 100افسروں نے منگلوارکو یونیورسٹی کے نئے رجسٹرارسے پہلا تبادلہ خیال کیا۔اس موقعہ پر رجسٹرارڈاکٹر نثاراحمدمیر نے کہا کہ بھارت میں اعلیٰ تعلیم کے نظام کو خاص طور سے آزادی کے بعد کافی فروغ حاصل ہوا ہے اور اب یہ عالمی سطح پر ایک سب سے بڑا نظام ہے۔بحیثیت جوائنٹ سیکریٹری یونیورسٹی گرانٹس کمیشن کے اپنے تعلق کو یادکرتے ہوئے انہوں نے افسروں کو بتایاکہ ہماری تمام تر کوششیں ادارے کیلئے ملک کی مختلف مالیاتی ایجنسیوں سے زیادہ سے زیادہ رقم حاصل کرنے پر مرکوزہونی چاہیے۔انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی کے ملازمین جن میں اساتذہ،افسر اور غیرتدریسی عملہ شامل ہیں ،کی اجتماعی کوششیں یونیورسٹی کو وائس چانسلر پروفیسرطلعت احمد کی قیادت میں بہترین سے بہترین ادارہ بنانے کیلئے ہونی چاہئیں۔ انہوں نے افسروں کویقین دلایا کہ ان کی جائز مانگوں کو معینہ مدت کے اندر پورا کیا جائے گا۔انہوں نے تاہم افسروں سے وائس چانسلر کے ہاتھ مضبوط کرنے کیلئے تعاون طلب کیا تاکہ ادارے کو بلندی کے مقام پر لیجایا جائے۔ڈاکٹر میر یونیورسٹی گرانٹس کمیشن کے جوائنٹ سیکریٹری اورنیشنل انسٹی چیوٹ آف ٹیکنالوجی سرینگر کے رجسٹراربھی رہ چکے ہیں اور انہوں نے حال ہی میں کشمیر یونیورسٹی کے رجسٹرار کاعہدہ سنبھالا۔