کشمیری مین اسٹریم لیڈران حریت کا تذکرہ کرنے سے خوفزدہ :جتندر سنگھ

ریاسی //مرکزی وزیر مملکت ڈاکٹر جتندر سنگھ نے کشمیر کے میں اسٹریم لیڈروں کو ہدف تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ یہ لیڈران حریت کا ذکر کرنے سے ڈر تے ہیں جبکہ ہر ایک پلیٹ فارم پر قوم پرست بی جے پی کی نکتہ چینی کرنے کے لئے ہمیشہ تیار رہتے ہیں۔ان باتوں کا اظہار انہوںنے یہاں پیر کے روز پی ایم ۔کسان یوجنا پر منعقدہ ایک تقریب کے حاشیہ پر ذرائع ابلاغ سے باتیں کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ یہ دلچسپی کی بات ہے کہ این سی، پی ڈی پی اور کشمیر پر مرکوز کانگریسی لیڈران بی جے پی کی تنقید کرنے کیلئے کوئی بھی موقعہ نہیں گنوا تے ہیں لیکن یہی لیڈرا ن حُریت ، جنہیں حوالہ رقم ، دہشت پسندی اور بھارت مخالف کاروائیوں میں ملوث پایا گیا ہے ،کے خلاف ایک بھی لفظ نہیں بولتے ہیں۔اس سے قبل ڈاکٹر جتندر نے پی ایم ۔کسان یوجنا کے استفادہ کرنے والوں کی فہرست تیار کرنے کا بھی جائزہ لیا ،جسے سرکاری طور سے وزیر اعظم نریندر مودی24فروری2019کو متعارف کریں گے۔انہوں نے ضلع میں پہلے ہی اس سلسلہ میں تقریباً25,000 کسانوں کی رجسٹریشن پر اطمینان کا اظہار کیا اور کہا کہ دیگر ایک ہزار کسانوں کے رجسٹریشن کاعمل سرعت سے جاری ہے۔کسانوں ، سرپنچوں اور پنچوں کے ساتھ تبادلہ خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ دنیا میں بہت ہی منفرد سکیم ہے،جسے وزیر اعظم نریندر مودی کی دور اندیشی سے لاگو کیا جا رہا ہے۔ڈاکٹر سنگھ نے مزید کہا کہ یہ سکیم قرضہ معافی کے لئے سابقہ سرکاروں کے اعلانات سے بہت ہی مختلف ہے ۔انہوں نے کہا کہ سکیم ہذا کے تحت ہر ایک درمیانہ درجے کے کسان کو ہر سال6000روپیہ حاصل ہوگا،جو اسے نہ صرف مالی مدد ہوگا بلکہ اس سے اسے وقار اور عزت کا بھی احساس ہوگا۔گورنر کے صلاح کار ایس سکندن اور سابقہ وزیر اجے نندا نے بھی اس موقعہ پر خطاب کیا۔