کشمیراور لداخ شدید سردی کی لپیٹ میں

 سرینگر //وادی اور لداخ میں برف باری کے بعد مطلع صاف رہنے اور دن میں دھوپ کھلنے کے نتیجے میں شبانہ درجہ حرارت میں پھر سے ریکارڈ گراوٹ دیکھنے کو مل رہی ہے۔سوموار اور منگل کی درمیانی رات سیاحتی مقام گلمرگ میں درجہ حرارت منفی7.0ڈگری سلسیش ریکارڈ کیا گیا جو اس سیزن میں ابھی تک سب سے کم درجہ حرارت ہے۔جبکہ دراس کرگل علاقہ میں شبانہ درجہ حرارت منفی 18.4ڈگری سلسیش ریکارڈ کیا گیا ۔ محکمہ موسمیات کے ترجمان کے مطابق سرینگر میں شبانہ درجہ حرارت منفی 1.4ڈگری سلسیش ریکارڈ کیا گیا جبکہ اس سے قبل کی رات یہاں شبانہ درجہ حرارت 2.6ڈگری سلسیش تھا ۔یکم ستمبر کو سرینگر میں پارہ منفی 2.5 ڈگری سلسیش تک گر گیا تھا جو سرینگر میں اب تک کا سب سے کم شبانہ درجہ حرارت تھا ۔ترجمان کے مطابق قاضی گنڈ میں کم از کم درجہ حرارت منفی 0.2 ڈگری تھا جو گزشتہ رات 3.2 ڈگری تھا۔ کوکرناگ میں کم سے کم درجہ حرارت منفی 1.2ڈگری ریکارڈ کیا گیا جو کہ پچھلی رات کو 1.9ڈگری تھا ۔کپوارہ قصبے میں گزشتہ رات منفی 1.0 ڈگری ریکارڈکیا گیا جو کہ اس سے قبل کی رات 1.0 ڈگری تھا ۔گلمرگ وادی کا سرد ترین علاقہ رہا جہاں شبانہ درجہ حرارت منفی7.0ڈگری تک گر گیا ۔لداخ میں بھی شدید سردی بڑھ رہی ہے اور وہاں شبانہ درجہ حرارت میں شدید گراوٹ دیکھنے کو ملی ہے ۔محکمہ کے ترجمان کے مطابق لیہہ میں کم سے کم درجہ حرارت منفی 10.8 ڈگری اور کرگل میں کم سے کم درجہ حرارت منفی9.1ڈگری ریکارڈ کیا گیا ہے۔گرگل کا دراس علاقہ سائبیریا کے بعد دنیا کا دوسرا سرد ترین مقام میں کم سے کم درجہ حرارت منفی 18.4 ڈگری ریکارڈ کیا گیا ہے ۔محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ وادی میں آنے والے دنوں میں خوش موسم کے دوران شبانہ درجہ حرارت میں مزید گراوٹ دیکھنے کو ملے گی اور وادی میں اگلے ایک ہفتے تک موسم خوشگوار رہے گا ۔