کشتواڑ کے دیہات میں پانی کی سخت قلت

کشتواڑ//ضلع کشتواڑ کے تحصیل پلماڑ اور کشتواڑکئی علاقوں میں بھی پانی کی قلت بدستور جاری ہے۔مقامی لوگوں نے ضلع انتظامیہ اور متعلقہ حُکام پر ضلع میں پینے کا پانی فراہم کرنے میں ناکام رہنے کا مبینہ الزام لگایا ہے،جس سے لوگوں کو کافی دقتوں کا سا منا کرنا پڑ رہا ہے۔ان لوگوں نے یہ بھی الزام لگایا ہے کہ محکمہ صت عامہ اس کی جانب کوئی توجہ نہیں دے رہای ہے ،یہاں تک کہ سیاست دان بھی اس مسلہ کا حل کرنے میں ناکام رہے ہیں۔۔اُنہوں نے کہا کہ اُنہیں ملحقہ علاقوں سے پانی کے گیلن اور بالٹین بھرنے کے لئے مجبوراً قطاروں میں رہنا لگتا ہے۔اُنہوں نے کہا کہ اُنہیں پانے حاصل کرنے کے لئے کلو میٹروں کی مصحافت طے کرنے کے لئے خچروں اور رہیڑیوں کو کرایہ پر لینا پڑتا ہے۔ان لوگوں نے یہ بھی الزام لگایا ہے کہ کئی ہفتوں سے انہیں پانی کا مسلہ ہے لیکن حُکام اس کی جانب کوئی توجہ نہیں دیتے ہیں۔اُنہوںنے کہا کہ ہم نے کئی مرتبہ متعلقہ حُکام سے اس بارے میں رابطہ بھی کیا لیکن کوئی فائدہ نہیں ہوا ہے۔ان لوگوں کا یہ بھی الزام ہے کہ مقامی اہلکار یہ مسلہ حل کرنے میں کوئی سنجیدگی نہیں دکھا رہے ہیں،جس کی وجہ سے لوگوں کو پانی کی قلت کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ متعلقہ حُکام نے مسلہ حل کرنے کی یقین دہانی کرائی تھی لیکن مسلے کا کوئی بھی حل ابھی تک نہیں کیا گیا ہے۔ایک مقامی باشنے انکش شرما نے کشمیر اعظمیٰ سے بات کرتے ہوئے الزام لگایا کہ محکمہ صحت عامہ پانی کی قلت والے علاقوں میں ٹینکروں کو بھی استعمال میں نہیں لاتا ہے، تاکہ لوگوں کو کسی حد تک سہولیت ہو پاتی ۔علاقہ کے لوگوں نے افسراں بالا سے اس مسلہ کی جانب توجہ دینے کی اپیل کی ہے ،تاکہ لوگوں کو سہولیت ہو۔