کتوں کے حملے میں 6افراد زخمی،ایک کی آنکھ ناکارہ

 
سرینگر//منوار آباد میںکل اس وقت خوف و دہشت پھیل گیاجب آوارہ کتوں کے حملے میں 6افراد زخمی ہوئے جن میں سے 3کو شدید زخمی حالت میں صدر ہسپتال میں داخل کیا گیا جہاں محکمہ بجلی کے لائین مین کی حالت نازک بتائی جارہی ہے اور اس کی ایک آنکھ ناکارہ ہوگئی ہے۔مقامی لوگوں اور دکانداروں نے سرینگرمیونسپل کارپوریشن کے خلاف شدید غم و غصہ کا اظہار کیا ہے۔جمعرات کی صبح11بجے منور آباد کے مین چوک میں اخوان ہوٹل کے قریب آوارہ کتوں کے ایک جھنڈ نے راہ گیروں اور دکانداروں پر حملے کئے جس کے نتیجے میں 6افراد زخمی ہوئے جن میں سے3کو صدر ہسپتال پہنچایا گیا ۔زخمیوں میں محکمہ بجلی کے لائین مین عبدالحمید بٹ ساکن شمس واری کی حالت نازک بتائی جارہی ہے اور اس کی ایک آنکھ بھی ناکارہ ہوگئی ہے ۔ہسپتال میں داخل کئے گئے دیگر2زخمیوں عبدالرشید شیخ اور دکاندار محمد لطیف کی مرہم پٹی اور علاج و معالجہ کے بعد ہسپتال سے رخصت کیا گیا ۔ان زخمیوں کو جب صدر اسپتال پہنچایا گیا تو وہاں موجود لوگوں نے ان کی حالت دیکھ کر کتوں کے حملوں کو روکنے کیلئے اقدامات اٹھانے کی سرکار سے اپیل کی ۔زخمیوں کے ساتھ آنے والے چند افراد نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ شہر میں آوارہ کتوں نے ہڑ بونگ مچادی ہے اور لوگ خاص کر معصوم بچے شام ہوتے ہی گھروں کے اندر سہم کر رہ جاتے ہیں۔انہوں نے بتایا کہ کتوں کے بڑھتے ہوئے حملوں سے مساجد میں نماز کی ادائیگی مشکل ہورہی ہے۔منور آبادکے دکانداروں اورلوگوں کا کہنا ہے کہ علاقہ میں آوارہ کتوں کی بڑھتی ہوئی تعداد سے وہ غیر محفوظ ہیں ۔لوگوں نے سرینگر میونسپل کارپوریشن کے خلاف زبردست غم و غصہ کا اظہار کرتے ہوئے بتایا کہ شہرمیں کتوں کی تعداد دن بہ دن بڑھ رہی ہے تاہم آج تک کوئی کارروائی نہیں کی گئی ۔