کاچہامہ کرالہ پورہ میں آگ ،3 مکانات خاکستر

 کپوارہ//سرحدی تحصیل کرالہ پورہ کے مضافاتی دیہات کاچہامہ میلیال میں میں جمعہ کوآگ کے ایک بھیانک حادثہ میں دو منزلہ 3مکانات جل کر راکھ کے ڈھیر میں تبدیل ہوئے ۔لوگو ں نے سڑک کی خستہ حالی کی وجہ سے فائر ٹینڈر دیر سے پہنچنے کے خلاف محکمہ تعمیرات عامہ کے خلاف سخت ناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے احتجاج کیا ۔جمعہ کی دوپہر12بجے ڈوبن کا چہامہ کے فرید احمد ملک کے لکڑی کے مکان سے اچانک آ گ نمودار ہوئی جس نے فوری طور آس پاس کے اس کے دو سرے بھائیو ں عبدلرشید ملک اور غلام نبی ملک کے مکانات کو اپنی لپیٹ میں لے لیا ۔مقامی لوگو ں کا کہنا ہے لو گ کھیت اور کھلیانو ں میں اپنے کام میں مصروف تھے کہ اچانک ڈوبن پٹی کاچہامہ سے چیخ و پکار کی آ وزیں سنائی دی جس کے بعد لوگ جائے واردات کی طرف دوڑ پڑے اور بچائو کاروائی شروع کی ۔ مقامی لوگو ں نے بتایا کہ لکڑی سے بنے ان مکانات میں آگ اس قدر بھیانک تھی کہ اس کی تپش سے لوگ ان مکانات کے نزدیک نہ جاسکے جبکہ فائر ٹینڈر کو بچائو کاروائی کے لئے طلب کیا گیا ۔مقامی لوگو ں نے بتایا کہ میلیال کاچہامہ سڑک کی خستہ حالی کی وجہ سے فائر ٹینڈر وقت پر نہیں پہنچ سکے جس کے نتیجے میں مکانات راکھ کی ڈھیر میں تبدیل ہوگئے۔اس دوران متا ثرین کا کہنا ہے کہ ان کے مکانو ں کو ایک سازش کے تحت آگ لگادی گئی کیونکہ یہا ں پر ایک کھیت سے پٹرول کی ایک بوتل بھی ضبط کی گئی جسمیں پٹرول بھی تھا ۔اس حوالے سے ایس ایچ او کرالہ پورہ وسیم احمد نے کشمیر عظمیٰ کو بتا یا کہ جس مقام آگ زنی کا واقعہ پیش آیا وہا ں سے پٹرول کی ایک بوتل کو پولیس نے اپنی تحویل میں لیکر معاملہ کی نسبت ایک کیس درج کر کے تحقیقات شروع کی ۔