کانگریس آئی تو کسانوں کو جیل نہیں جانا ہوگا: راہل

 بھرت پور// کانگریس کے قومی صدر راہل گاندھی نے آج پھردہرایا کہ اگر کانگریس اقتدار میں آئی تو قرض نہ چکانے والے کسانوں کو جیل نہیں جانا پڑے گا۔ مسٹر گاندھی نے بھرت پور کے لوہاگڑھ میں عوامی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ نیرو مودی 35 ہزار کروڑ، وجے مالیا 10 ہزارکروڑ روپیے ہڑپ کر بھاگ گئے جبکہ کسانوں کو 20 ہزار روپیے نہ چکانے پر جیل میں ڈال دیا جاتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ گذشتہ الیکشن سے پہلے وزیراعظم نریندر مودی اپنی ہر تقریر میں کہتے تھے کہ وہ ہر شخص کے بینک کے کھاتوں میں 15 لاکھ روپیے جمع کرائیں گے ، یہ ممکن نہیں ہے اور یہ ہوبھی نہیں سکتا لیکن ہم کھاتوں میں 'نیائے منصوبہ'کے تحت ملک کے پانچ کروڑ خاندانوں کے 25 کروڑ افراد کے کھاتے میں ہر سال 72 ہزار روپیے ڈالیں گے ۔ یہ روپے انھیں تب تک ملے گا جب تک ان کی کم ازکم آمدنی ماہانہ 12 ہزار روپیے نہ ہوجائے ۔مسٹر گاندھی نے کہا کہ ان کی حکومت آنے کے بعد ملک کے بجٹ کے ساتھ ہی کسانوں کے لیے الگ سے بجٹ پیش کیا جائے گا تاکہ کسانوں کو پہلے ہی پتہ چل جائے کہ انھیں کم ازکم امدادی قیمت کتنی ملے گی اور کتنا بونس ملے گا۔ انہوں نے کہا کہ 22 لاکھ خالی اسامیوں کو بھرا جائے گا۔ 10 لاکھ نوجوانوں کو روزگار دیا جائے گا۔ نوجوانوں کو ذاتی کاروبار کے لیے حکومت کی منظوری کی ضرورت نہیں پڑے گی۔ مسٹر گاندھی نے مزید کہا کہ مسٹر مودی اور امت شاہ نفرت اور بانٹنے کی بات کرتے ہیں جبکہ کانگریس بھائی چارے اور جوڑنے کی بات کرتی ہے ۔ اس موقع پر انہوں نے الیکشن میں رائے دہندگان سے کانگریس کو فاتح بنانے کی گزارش کی۔ یو این آئی