کامرس کالج نے یک روزہ ورکشاپ کا انعقاد کیا | کائنات کی ہر شے تغیر پذیر ہے : پروفیسر عرفان علی

جموں// گورنمنٹ ایس پی ایم آر کالج آف کامرس کے ایکو کلب اور شعبہ ماحولیاتی نے پرنسپل ڈاکٹر سریندر کمار کی سرپرستی میں “تتلی کی شناخت اور اس کی گنتی” پر ایک روزہ ورکشاپ کا انعقاد کیا۔ کالج پرنسپل نے ماحولیات کے تحفظ میں تتلیوں کی اہمیت پر تفصیلی گفتگو کی اور محکمہ انوائرمنٹل سائنسز اور ایکو کلب پر زور دیا کہ وہ ایسے آگاہی پروگرام باقاعدگی سے منعقد کریں۔ پروفیسر باربرا کول نے رسمی خطبہ استقبالیہ پیش کیا اور فطرت کے مشاہدے اور سیکھنے کی اہمیت پر روشنی ڈالی۔ سائنس کالج جموں سے ریسورس پرسن ڈاکٹر شاکھا شرما نے تتلیوں کی شناخت اور گنتی کی بنیادی باتیں تفصیل سے بتائیں۔

انہوں نے شرکاء کو تتلیوں کی تصاویر لینے کی ترغیب دی اور مختلف قومی ویب پورٹلز جیسے “فاؤنڈ بٹر فلائیز”، “نیچرلسٹ” اور “انڈیا بائیو ڈائیورسٹی پورٹل” پر تصاویر اپ لوڈ کرنے کے بارے میں تفصیلی مظاہرہ بھی کیا۔ بعد ازاں کالج گراؤنڈ میں تتلی دیکھنے کی سرگرمی کو بھی گہری دلچسپی سے دیکھا۔ کالج کیمپس میں فیکلٹی اور طلباء کے ذریعہ کچھ طلباء پودوں کے پتوں پر تتلیوں کے انڈے اور کیٹرپلرز تلاش کرنے میں کامیاب ہوئے۔ڈاکٹر مونیکا ملہوترا نے اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے کیٹرپلرز کی حفاظت کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔ پروفیسر عرفان علی نے تتلی اور پھول کے درمیان نازک رشتے پر مختلف اردو شعرا کے اشعار اور ادیبوں کے اقوال پیش کرتے ہوئے کہا کہ کائنات کی ہر شے کے ارتقائی منازل کو محسوس کرنے کے لیے انسان کو اپنے حواس خمسہ کو بیدار رکھنا ضروری ہے۔

پروگرام میں پروفیسر ارچنا کول، پروفیسر سویتا جموال، ڈاکٹر سندھیا بھردواج، پروفیسر مونیکا مہاجن، پروفیسر رجنی بالا اور کالج کے دیگر فیکلٹی ممبران نے شرکت کی۔اس پروگرام کو ایکو کلب کمیٹی کے اراکین نے ترتیب دیا تھا ڈاکٹر سربجیت کور اور پروفیسر رشو مہاجن نے بھی بھر پور تعاون پیش کیا۔ پروگرام میں نظامت کے فرائض پروفیسر عرفان علی نے بخوبی انجام دیے اور شکریہ کا رسمی کلمات ڈاکٹر دیپک پٹھانیا نے ادا کیا۔