کاروان امن برس سروس معطل

سرینگر،پونچھ// کشمیر اور مظفر آباد کے درمیان چلنے والی ہفتہ وارکاروان امن بس ریاست جموں کشمیر میںکشمیری پنڈتوں کی تہوار مہا شیو راتری کی چھٹی کے پیش نظر سوموار کو معطل رہی ۔ادھر راولاکوٹ پونچھ بس سروس بھی سوموار کو معطل رہی۔اس دورا متعلقہ محکمے کے ایک افسر نے بتایا اس سلسلے میں گاڑی میں سفر کرنے والے مسافروں کو پہلے ہی مطلع کیاگیا ۔ ذرائع نے بتایا کہ مسافروں کو اگلے ہفتے کی بس میں روانہ کیاجائے گا۔متعلقہ حکام نے بس سروس چھٹی کے پیش نظر معطل رکھنے کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا مسافروں کو پہلے ہی اس حوالے سے مطلع کیاگیا تھا۔انہوں نے بتایااب آج کے مسافروں کو دوسری ہفتے کی بس میں روانہ کیا جائے گا۔خیال رہے مذکورہ بس سروس 7اپریل 2005سے جاری ہے جس کی مدد سے بچھڑے خاندانوں کو دہائیوں کے بعد پھر ایک بار ملنے کا موقع مل گیاجس کے بعد لوگوں نے سرکار کے اس اقدام کی زبردست سراہنا کی ہے ۔ادھرہفتہ وار پونچھ راولاکوٹ راہ ملن بس سروس پیر کے روز ملتوی کردی گئی ۔پونچھ حکام کے مطابق اس باربھی سپورٹس سٹیڈیم پونچھ سے چکاں داباغ کے راستے راولاکوٹ کیلئے بس روانہ کی گئی تاہم حدمتارکہ پر پاکستان کی جانب سے گیٹ نہیں کھولا گیا جس کے بعد انتظامیہ نے بس واپس لے آنے کا فیصلہ کیا۔ رابطہ کرنے پر انچارج کسٹوڈین جہانگیر احمد خان نے بتایا کہ پونچھ سے راولاکوٹ کے لئے بس روانہ کی گئی تھی لیکن جب وہ حد متارکہ پر پہنچے توپاکستانی زیر انتظام کشمیر کی فوج کی جانب سے گیٹ نہ کھولا گیا اور کافی دیر انتظار کے بعد بس کو واپس لاناپڑا۔انہوں نے کہا کہ اس دوران جب پاکستانی زیر انتظام کشمیر کی راولاکوٹ انتظامیہ کے عہدیداران سے رابطہ کیا گیا تو اس نے کہا کہ بس سروس کو شیوراتری کے تہوار کے پیش نظر ملتوی کیاگیاہے۔انچارج کسٹوڈین نے امید ظاہر کی کہ اگلے ہفتے دوبارہ سے بس سروس بحال ہوجائے گی۔