ڈھیڈہ نالہ میں7سال پہلے گرا پل ابھی تک تعمیر نہ ہو سکا

زاہد بشیر
گول//سب ڈویژن گول کے ڈھیڈہ علاقہ میں قبل از 7سال ایک پُل شدید بارشوں کی وجہ سے ڈھہ گیا تھا لیکن ابھی تک کسی نے اس کی طرف کوئی توجہ نہیں دی ۔ نا ہی پنچایتی نمائندوں نے اس جانب کوئی توجہ دی اور نہ ہی ڈی ڈی کونسلروں نے اس پل کو بنانے میں کوئی پہل کی ۔ شدید بارشوں کے دوران دنوڈ ، جڈا ، چلد و ڈھیڈہ ملحقہ جات کے علاقوں کو صرف یہ پل عبور مو مرور کے لئے آسان راستہ رہتا تھا لیکن چار سال قبل شدید بارشوں کی وجہ سے پل ڈھہ گیا تب سے علاقہ و دوسرے لوگوں کو بالخصوص شدید بارشوں میں کافی دقتوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ اگر چہ بیک ٹو ولیج میں بھی اس پل کی تعمیر کے لئے کمیٹیوں سے استدعا کی تھی لیکن انہوں نے بھی اس مسئلے کو ردی کی ٹوکری میں ڈال رکھا ہے ۔ڈھیڈہ کے نوجوان سماجی کار کن ارجمند گنائی نے کشمیر عظمیٰ کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہا کہ اس پل کی تعمیر کے لئے کافی مرتبہ اعلیٰ حکام و سیاسی پنچایتی سطح پر بھی مطالبہ کیا تھا کہ پل کو تعمیر کیا جائے کیونکہ یہ بارشوں کے دوران یہ واحد بناخطرہ کا راستہ ہے جہاں سے لوگ گزر تے تھے لیکن چار سال سے لوگوں کو بارشوں کے دوران کافی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔ انہوں نے ضلع ترقیاتی کمشنر رام بن ، ڈی ڈی سی چیر پرسن و ایس ڈی ایم گول سے مطالبہ کیا کہ علاقہ کے دیگر مسائل کے ساتھ ساتھ اس پل کی تعمیر کو جلد یقینی بنایا جائے تا کہ یہاں سے آنے جانے والے لوگوں کو کسی قسم کی پریشانیوں کا سامنا نہ کرنا پڑے ۔