ڈپٹی کمشنراراضی حصول کے معاملات تیز کریں

  پروجیکٹ سمپرک اور بیکن حکام کو معمولی معدنیات کی دستیابی میں سہولت فراہم کرنے کی ہدایت

 جموں// صوبائی کمشنر جموں ڈاکٹر راگھو لنگر نے متعلقہ افسران اور ڈپٹی کمشنروں کے ساتھ ایک میٹنگ میں سمپرک اور بیکن کے تحت بارڈر روڈ آرگنائزیشن (بی آر او) کے اراضی کے حصول کے معاملات پر پیش رفت کا جائزہ لیا۔سمپرک انجینئروںنے ڈویژن کے مختلف اضلاع میں زیر التواءاراضی کے حصول کے معاملات سے صوبائی کمشنر کو آگاہ کیا۔ ہر کیس پرتفصیلی بات چیت کی گئی اور ڈپٹی کمشنروں نے زمین کے حصول کے زیر التواءمقدمات کی موجودہ صورتحال سے آگاہ کرنے کے علاوہ زمین کے مالکان کو معاوضے کی تقسیم کی صورتحال سے آگاہ کیا۔صوبائی کمشنر نے ڈی سیز سے کہا کہ وہ اپنے متعلقہ اضلاع میں بی آر او سے متعلق زمین کے حصول کے تمام زیر التوا مقدمات کو جلد از جلد مکمل کرنے کے لیے حل کریں۔ انہوں نے متعلقہ ڈی سیز کو معاوضے کی رقم کی جلد ادائیگی کی بھی ہدایت کی جہاں زیر التواءہے۔اجلاس کو بتایا گیا کہ بی آر او نے مختلف اضلاع میں بڑی سڑکوں اور پلوں کو مکمل کر لیا ہے اور کئی سڑکوں اور پلوں پر کام جاری ہے اور بین الاضلاع سڑکوں کے رابطوں کو بہتر بنانے کے لیے مقررہ مدت میں مکمل کیا جائے گا۔13 بارڈر روڈ ٹاسک فورس (13 BRTF) کے کام کی پیشرفت کا جائزہ لیتے ہوئےبتایا گیا کہ (13 BRTF) نے حال ہی میں آگرہ چک-آر ایس پورہ- دبلے ہار- ارنیا کھوڑ، اکھنور- سوہل- کلیتھ- سیلوالی جیسی کئی سڑکوں کو مکمل کیا ہے۔ -پلان والا، بٹل – مالا، کپاگلا – بٹل، پارول- کوریپنوں- راجپورہ، ڈوگرہ مندر- پارول- جنیال- بامیال، ستواری- منڈل- مکوال، بٹل- ناروجیاں- کٹاو¿، کچریال ویو پوائنٹ تک زیرو اینڈ، ڈومیل- جندرہ- کھڑٹہ دھر- ادھم پور سڑکیں وغیرہ، جبکہ چڈوال- سنجیمور- پہاڑ پور- سمبل، دیالچک- رام کوٹ، بسولی- بنی پر کام جاری ہے۔متعلقہ افسر نے پاورپوائنٹ پریزنٹیشن بھی دی اور صوبائی کمشنر کو ان مسائل سے آگاہ کیا جن پر تیزی سے کام کرنے کی ضرورت ہے۔صوبائی کمشنرنے ہر پروجیکٹ/کام پرتفصیلی بات چیت کی اور متعلقہ ڈی سیز کو ہدایت کی کہ وہ تمام متوقع مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کریں۔اسی طرح 31 بارڈر روڈ ٹاسک فورس کے متعلقہ افسر نے بھی مکمل ہونے والے منصوبوں اور زیر تعمیر سڑکوں کے علاوہ درکار مسائل کے حل کے بارے میں بھی آگاہ کیا۔حصول اراضی، جنگلات کی منظوری، معمولی معدنیات کے لیے قلیل مدتی اجازت نامے کے اجراءوغیرہ سے متعلق امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔صوبائی کمشنرنے ڈپٹی کمشنروں کو ہدایت کی کہ وہ STPs کی اجازتوں پر عمل کریں تاکہ کام کی تیزی سے تکمیل کے لیے BRO کو معمولی معدنیات کی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے STP جاری کیا جا سکے۔انہوںنے کچھ اضلاع میں معاوضے کی تاخیر سے ادائیگیوں کا سخت نوٹس لیا اور متعلقہ افسران کو ہدایت کی کہ اعداد و شمار کو ملانے کے لیے ایک طریقہ کار وضع کیا جائے اور اس بات کو یقینی بنایا جائے کہ معاوضے کی رقم زمین کے مالکان کو بروقت ادا کی جائے۔