ڈوڈہ ۔گھٹ روڈ مقامی لوگوںکیلئے باعث مصیبت

ڈوڈہ//ضلع ڈوڈہ میں اکثر دیکھا گیا ہے کہ حادثے کا شکار یا خراب شدہ اوربے کار گاڑیوں کوسڑکوں اور شاہرائوں کے کناروں پر ایسی جگہوں پرکھڑا کیا جاتا ہے جہاں سڑک کی تنگی اس کی بالکل بھی اجازت نہیں دیتی ہے اور نتیجتاً بعض اوقات ٹریفک کی آوا جاہی میں رخنہ پڑتا ہے اور کبھی کبھار تو ایسا ٹریفک جام لگ جاتا ہے جس وجہ سے لوگوں کو سخت پریشانی اور تکلیف ہوتی ہے۔ایسی گاڑیاں مہینوں اور بعض اوقات برسوں تک ان جگہوں پرپڑی رہتی ہیںمگر گاڑی مالکان اور متعلقہ حکام کے لئے گویا یہ کوئی مسئلہ ہی نہیں ہوتا ہے اور ان کو ہٹانے کی کوئی ضرورت ہی محسوس نہیں کی جاتی ہے۔قصبہ ڈوڈہ کے محلہ نگر ی میںگھٹ روڈ کے کنارے پر بھی ایسی ہی ایک خراب شدہ ناکارہ گاڑی گذشتہ تین برسوں سے آنے جانے والوں کے لئے باعثِ پریشانی بنی ہوئی ہے اور لوگوں کی بار بار کی گذارشات کے با وجود بھی اسے ہٹایا نہیں جا رہا ہے۔محکمہ آئی سی ڈی ایس گندو کی یہ ناکارہ گاڑی تین سال قبل ایسی جگہ کھڑی کی گئی ہے جہاں شاہراہ تنگ ہے اوراس کی وجہ سے یہاں بار بار ٹریفک جام لگ جاتا ہے اور لوگوں کے لئے پیدل چلنا بھی مشکل ہو جاتا ہے۔ اس گاڑی کے آس پاس لوگ ٹین، لکڑی،اینٹیں،اور ریت بجری وغیرہ بھی ڈالتے ہیں جس وجہ سے شاہراہ کا کچھ حصہ گویا لوگوں کی ملکیت بن گیا ہے۔ اجمل حسین نٹنوں اور متعدد دیگر مقامی معززین نے کشمیر عظمیٰ کا بتایا کہ اُنہوں نے بارہا ضلع انتظامیہ،میونسپل کمیٹی ڈوڈہ،ٹریفک حکام اور محکمہ آئی سی ڈی ایس سے گذارش کی کہ اس گاڑی کو یہاں سے ہٹایا جائے مگر کسی نے آج تک توجہ نہ دی ۔اُنہوں نے کہا کہ یہ گاڑیاں مقامی لوگوں اور آنے جانے والوں کے لئے مصیبت بنی ہوئی ہے اور اگر اس کی وجہ سے یہاں کوئی نقصان ہوا تو اس کی ذمہ داری متعلقہ حکام پر ہو گی۔اُنہوں نے کہا کہ اگر اسے یہاں سے ہٹایا نہ گیا تو لوگ احتجاج کرنے پر مجبور ہو جائیں گے۔