ڈوڈہ کے گریجویٹ انجینئر سرکار سے خفا

  ڈوڈہ //گریجویٹ انجینئرس ڈوڈہ نے آل جموں و کشمیر سول انجینئر ایسو سی ایشن کے بینر تلے ڈوڈہ میں ایک احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرین سرکار پر انکے ساتھ سوتیلی ماں کا سلوک کرنے اور وعدے سے مکر جانے کا الزم لگا رہے تھے۔ریاست کے دیگر ضلع صدر مقامات کی طرح ڈوڈہ میں بھی میکنکل، پی ایچ ای ،پی ڈبلیو ڈی کے سول انجینئر اکٹھا ہوئے اور سرکار کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے دن بھر دھرنے پر بیٹھ گئے۔مظاہرین اپنے عرصہ دراز سے التوا میں پڑے مطالبات کا حل چاہتے تھے،خصوصاً ٹائم بوانڈرننگ گریڈ ، باقاعدہ بنانے اور تمام سطحوں پر انکی خدمات کو تسلیم کرنیکا مطالبہ کر رہے ہیں۔مظاہرین اپنے تنخواہوں میں تفاوت کو دور کرنے اور انجینئرنگ محکمہ میںکیڈر کا جائزہ لینے کا مطالبہ بھی کر رہے تھے۔وہ مقرر کردہ ٹی اے میں اضافہ کا بھی مطالبہ کر رہے تھے ،جو کہ 30روپے مقرر ہے۔احتجاجی مظاہرین نے الزام لگایا کہ انہیں دھوکہ محسوس ہو رہا ہے کیونکہ سرکار نے انہیں یقین دیا تھا کہ ساتویں تنخواہ کمیشن لاگو کرنے کے دوران انکے مسائل کا ازالہ کیا جائے گالیکن ساتویں تنخواہ کمیشن میں اس قسم کا کوئی ذکر نہیں ہے جبکہ اے سی پی کے فوائد کے اے ایس کیڈر کو دیا گیا ہے جبکہ انجینئر برادری کو یکسر نظر انداز کیا گیا ہے۔بعدازاں، احتجاجی انجینئروں نے بذریعہ ڈی سی بھوانی رکوال وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کو ایک یا داشت ارسال کیا،جس میں انجینئروں کے مسائل بیان کئے گئے ہیں اور انہیں فوری طور حل کرنے کی اپیل کی گئی ہے۔ مظاہرین میں ایس ای، پی ڈبلیو ڈٖی ڈوڈ ہ انجینئر ناصر گونی، صدر ضلع ڈوڈہ انجینئر حفیظ اللہ ریشی، جنرل سیکرٹری انجینئر فیاض احمد مہتہ، ایس ای ہائیڈرالک انجینئر ڈی ایس چاڑک، ایگزیکٹو انجینئر پی ڈبلیو ڈی ڈوڈہ بی ایل ٹھسو، ایگزیکٹو انجینئر آبپاشی و فلڈ کنٹرول انجینئر بی بی گپتا، اے ای ای پی ایم جی ایس وائی عطا محمد شیخ  اور اے ای ای پی ایچ ای منظور میر بھی شامل تھے۔