ڈوڈہ کے باہر گرینیڈ دھماکہ، اہلکار زخمیDPL

 ڈوڈہ+ترال// پیر کو ڈسٹرکٹ پولیس لائنز ڈوڈہ کے باہر نامعلوم افراد کی جانب سے پولیس اہلکاروں کی ایک پارٹی پر دستی بم پھینکا گیا، جس کے نتیجے میں پولیس کے اسپیشل آپریشن گروپ کا ایک اہلکار زخمی ہوگیا۔ڈی ایس پی آپریشنز ڈوڈہ، راج کمار نے کشمیر عظمیٰ کو بتایا کہ اس دستی بم کو ڈی پی ایل ڈوڈہ کے گیٹ کے باہر زیر تعمیر عمارت کے اندر پھینک دیا گیا جہاں پولیس اہلکار ڈیوٹی پر تھے۔اس دھماکے میں ، ایس او جی اہلکار45سالہ ظہور احمدولد منیر احمد ، جو ضلع پونچھ کا رہائشی ہے ، کو زخم آئے ۔کمار نے بتایا کہ ظہور کو ایسوسی ایٹ اسپتال گورنمنٹ میڈیکل کالج ڈوڈہ لایا گیا ، جہاں بتایا جاتا ہے کہ وہ مستحکم ہے۔ میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ، ڈاکٹر یودویر نے بتایا کہ پولیس اہلکار کی ٹانگ میں چوٹ ہے اور اس کا علاج جاری ہے۔ ایس پی آپریشنز ڈوڈہ نے بتایا کہ حملے کے فورا بعد پولیس اور فوج نے علاقے کو گھیرے میں لیکر تلاشیاں لیں۔ادھر 42آر آر اور پولیس آپریشن گروپ اونتی پورہ نے مشترکہ طور پر میڈورہ ترال کے جنگل میں مصدقہ اطلاع ملنے پر تلاشیاں لیں اور جنگجوئوں کی جانب سے زیر زمین ہائیڈ اوٹ کا پتہ چلایا اور تلاشیاں لینے کے بعد اس میں سے فوج کی وردیاں، کپڑے ، بیگ اور جائے نماز بر آمد کئے۔پولیس کے مطابق ہائیڈ اوٹ نیا نہیں بہت پرانا ہے اور اس میں کوئی اسلحہ وغیر بر آمد نہیں کیا گیا ہے۔ ہائیڈ اوٹ کو بعد میں تباہ کیا گیا۔